ہاکی فیڈریشن کیخلاف اٹھنے والی آوازیں روکنے کیلئے اوچھے ہتھکنڈے دوبارہ شروع

اسلام آباد(سپورٹس رپورٹر)پاکستان ہاکی فیڈریشن نے ایک بار پھر فیڈریشن کیخلاف اٹھنے والی آوازیں روکنے کیلئے اوچھے ہتھکنڈے استعمال کرنا شروع کر دیئے

فیڈریشن کیخلاف بات کرنے پر پنجاب ہاکی ایسو سی ایشن نے پی ایچ ایف کانگرنس ممبر سید علی عباس کو نوٹس جاری کر دیا ہے ۔

پاکستان ہاکی فیڈریشن کے صدر کے بھائی اور پنجاب ہاکی ایسو سی ایشن کے سیکرٹری آصف ناز کھوکھر کی جانب سے جاری ہونیوالے نوٹس میں کہا گیا کہ پی ایچ ایف کانگرنس ممبر اور گوجرانوالہ ہاکی ایسو سی ایشن کے صدر کی حیثیت سے علی عباس نے فیڈریشن کیخلاف بیانات دیئے جس سے فیڈریشن کی ساکھ کو نقصان پہنچا

جبکہ پاکستان ہاکی فیڈریشن کے صدر کی ہدایت پر نوٹس جاری کیا گیا ، نوٹس میں مزید کہا گیا ہے کہ ہاکی فیڈریشن کیخلاف بیانات پر نوٹس کا جواب 11فروری تک دیا جائے ۔

واضح رہے کہ پاکستان کی ورلڈ کپ ، ایشین گیمزسمیت دیگر انٹرنیشنل ایونٹس میں شرمناک کارکردگی پر اولمپینز کی ایک بڑی تعداد سراپا احتجاج ہے اور وزیر اعظم عمران خان سے پاکستان ہاکی فیڈریشن کے عہدداران کو برطرف کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں ۔

پاکستان سپرلیگ کا چوتھا ایڈیشن 14 فروری سے شروع ہو گا

دبئی /لاہور (سپورٹس رپورٹر)پاکستان سپرلیگ کا چوتھا ایڈیشن 14 فروری سے رنگا رنگ افتتاحی تقریب کے ساتھ انٹرنیشنل اسٹیڈیم دبئی میں شروع ہو گا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق ایونٹ کے پہلے مرحلے کے مقابلے دبئی، شارجہ اور پہلی بار ابوظہبی میں بھی منعقد ہوں گے

لاہور کا قذافی اسٹیڈیم 3 اور کراچی کا نیشنل اسٹیڈیم فائنل سمیت 5 میچوں کی میزبانی کرےگا۔دوسری جانب پاکستان کے بین الااقوامی شہرت کے حامل آئی سی سی کے بہترین امپائر کا ایوارڈ جیتنے والے علیم ڈار اس بار پاکستان سپر لیگ کا ایک بھی میچ سپر وائز نہیں کریں گے۔

علیم سرور ڈار 7 فروری کو جنوبی افریقا روانہ ہوں گے جہاں وہ 13 فروری سے جنوبی افریقا اور سری لنکا کے پہلے ٹیسٹ میچ میں بطور امپائر خدمات سرانجام دیں گے۔

21 فروری سے پورٹ الزبتھ کا دوسرا ٹیسٹ میچ بطور امپائر اپنے فرائض انجام دینے والے علیم ڈار جنو بی افریقا اور سری لنکا کے دو ٹیسٹ سپر وائز کر نے کے بعد بھارت کے شہر ڈیہرڈن روانہ ہوں گے جہاں وہ 28 فروری سے 10مارچ تک آئرلینڈ اور افغانستان کے 5 ون ڈے میچوں میں بھی امپائرنگ کریں گے

یاد رہے ٹیسٹ اسٹیٹس ملنے کے بعد افغانستان نے بھارتی ریاست اترکھنڈ کے شہر ڈیہرڈن کے اسٹیڈیم کو اپنا ہوم گراونڈ بنایا ہے جہاں وہ 15 مارچ سے آئرلینڈ کے خلاف ایک ٹیسٹ کی سیریز کے واحد ٹیسٹ میں مقابلہ کریگی اور یہاں بھی علیم سرور ڈار ہی امپائرنگ کے فرائض سرانجام دیں گے

123 ٹیسٹ میچو ں میں امپائرنگ کرنے والے علیم ڈار آئرلینڈ اور افغانستان کی ون ڈے سیریز میں اپنا 200 واں ون ڈے انٹرنیشنل سپر وائز کریں گے۔16فروری 2000ءکو جناح اسٹیڈیم گوجرنوالہ میں پاکستان اور سری لنکا کے درمیان کھیلے جانے والے دوسرے ون ڈے انٹرنیشنل میں علیم ڈار نے پہلی بار امپائرنگ کی تھی۔

باکسرعامر خان20 اپریل کو باکسر ٹیرینس کرافورڈ کے خلاف رنگ میں اتریں گے

اسلام آباد (نمائندہ خصوصی)پاکستانی نژاد برطانوی باکسر عامر خان20 اپریل کو امریکا میں میزبان ملک کے باکسر ٹیرینس کرافورڈ کے خلاف رنگ میں اتریں گے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق عامر خان ٹریننگ کے ساتھ ساتھ اپنی فٹنس کو بھی بہتر بنانے میں مصروف ہے انہوں نے اپنی ٹریننگ اورفٹنس ایکسرسائز کی وڈیو سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کی ۔

عامر خان کے حریف 31 سالہ کرافورڈ اپنی کیٹیگری میں دنیا کے تین بہترین باکسرز میں شمار کیے جاتے ہیں۔ان کا کہنا ہے کہ عامر خان ایک ، بہترین ، مشکل اور وسیع تجربہ رکھنے والے باکسر ہیں۔

معین خان نے کوچ مکی آرتھر کے بیان کو احمقانہ قرار دیدیا

اسلام آباد (نمائندہ خصوصی)پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان معین خان نے کوچ مکی آرتھر کے بیان کو احمقانہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ کوچ کو میڈیا کے سامنے کھلاڑیوں کی برائیاں نہیں کرنی چاہئیں۔

میڈیا سے گفتگو میں معین خان نے کوچ مکی آرتھر کو آڑے ہاتھوں لیا ، سابق کپتان نے کہا کہ کوچ مکی آرتھر کا یہ کہنا کہ کھلاڑی ان کی پلاننگ کے مطابق نہیں کھیلے، احمقانہ بیان ہے۔

معین خان نے کہا کہ پی سی بی کی گورننگ بورڈ کے اجلاس میں چیف سلیکٹر کو بلانے اور ان سے پوچھ گچھ کرنا ایک اچھی روایت ہے۔معین خان نے کہا کہ ورلڈ کپ تک کیلئے پول بنادیں تو بہتر ہوگا

انہوں نے کہا کہ سرفراز کو کپتان مقرر کرنے سے کھلاڑیوں کو پیغام مل گیا کہ ان کا کپتان کون ہے۔

انڈین پریمیر لیگ کا بارہواں ایڈیشن 23 مارچ سے شروع ہو گا

ممبئی (ویب ڈیسک)انڈین پریمیر لیگ کا بارہواں ایڈیشن 23 مارچ سے شروع ہو گا اورٹور نا منٹ کے تمام میچز بھارت میں کھیلے جائیں گے۔

بھارتی کرکٹ بورڈ کی طرف سے جاری کردہ بیان کے مطابق رواں برس لیگ کی تاریخیں ملک میں عام انتخابات سے متصادم ہیں اسلئے انتخابات کی تاریخوں کے اعلان کے بعد حتمی طور پر لیگ کے میچز کے شیڈول اور مقامات کا اعلان کیا جائےگا۔

دفاعی چمپئن چنائی سپر کنگز ٹائٹل کا دفاع کرےگی اور دفاعی چمپئن ہونے کی حیثیت سے چنائی لیگ کے افتتاحی اور فائنل میچ کی میزبانی کا حق حاصل ہو گا۔

جنوبی افریقا سے پاکستانی ٹیم کی شکست،ذمہ دارکون ؟

لاہور(ماجد اسحاق سے)قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے کہاہےکہ جنوبی افریقا سے شکست کا ذمہ دار کسی ایک کو نہیں ٹھہراؤں گا کیونکہ ہم سب شکست کے ذمہ دار ہیں۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مکی آرتھر نے کہا کہ ہم نے ساڑھے چار ماہ مسلسل کرکٹ کھیلی، نوجوان کھلاڑی اچھا پرفارم کر رہے ہیں، ہمیں ہر کنڈیشنز میں اچھا کھیلنے کی ضرورت ہے، ٹیسٹ فارمیٹ میں ابھی بہتری کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ شکست کا ذمہ دار کسی ایک کو نہیں ٹھہراؤں گا، ہم سب شکست کے ذمہ دار ہیں، جنوبی افریقا میں کبھی کوئی ایشین ٹیم ٹیسٹ سیریز نہیں جیتی، وہاں بیٹنگ کی کنڈیشنز ٹف ہوتی ہیں۔

ہیڈ کوچ کا کہنا تھا کہ ورلڈ کپ کیلئے کمبی نیشن بنارہے ہیں اور چیف سلیکٹر کے ساتھ مشاورت میں ہیں، آسٹریلیا کے خلاف سیریز میں مائنڈ بنائیں گے کہ کیسے ورلڈکپ میں جانا ہے، انگلینڈ کے خلاف سیریز والے پندرہ کھلاڑی ہی ورلڈکپ میں جائیں گے۔

مکی آرتھر نے مزید کہاکہ سرفراز سے جو ہوا وہ غلط تھا، اس نے معافی مانگی اور سزا بھی ہوگئی، اب آگے بڑھنا چاہیے، سرفراز کے معاملے میں پی سی بی نے میرے ساتھ مکمل مشاورت کی، سرفراز احمد کی بیٹنگ پر بہت محنت کی جارہی ہے، ان کی فارم سے پریشان نہیں ہوں، وہ باصلاحیت کرکٹر ہے، ساڑھے چار ماہ سرفراز نے اچھی کیپنگ کی۔

ایک سوال کے جواب میں ہیڈ کوچ نے کہا کہ ڈریسنگ روم میں جو ہوتا ہے وہ اندر ہی رہنا چاہیے، مجھے افسوس ہوتا ہے جب چیزیں باہر آتی ہے، میں ایک ایماندار شخص ہوں اور پروفیشنل کام کرتا ہوں، میرا کہنا بہتری کے لیے ہوتا ہے، مجھے ڈریسنگ روم کی باتیں باہر آنے سے نفرت ہے۔

مکی آرتھر نے کہا کہ ورلڈکپ کے بعد میرے کام کرنے یا نہ کرنے کا پی سی بی پر منحصر ہے لیکن مجھے پاکستان ٹیم کے ساتھ مزید کام کرنا اچھا لگے گا۔

پی سی بی نے درجنوں کرکٹرز کو بے روز گار کرنے سے متعلق اہم فیصلہ کر لیا

لاہور(ماجد ہنجراء سے )چیئر مین پی سی بی احسان مانی نے وزیراعظم پاکستان عمران خان کی ہدایت کو مد نظر رکھتے ہوئے اراکین پر واضح کردیا کہ محکمہ جاتی ٹیموں کا کوئی مستقبل نہیں جس پر ریجنز کی جانب سے سامنے آنے والے تحفظات کو یکسر نظر انداز کر دیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ کے گورننگ بورڈ کا 52 واں اجلاس کی اندرونی کہانی منظر عام پر آگئی جس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ نئے ڈومیسٹک سیزن میں اب 8 ریجنز فرسٹ کلاس کرکٹ کھیلیں گی جس کے مطابق ٹیموں کے ساتھ محکموں کو ملا کر ٹیمیں بنائی گئی ہیں،البتہ ریجنز اور محکموں کے معاملات ابھی طے ہونا باقی ہیں۔نئے قوانین کے مطابق فرسٹ کلاس سیزن کا آدھا خرچ محکمے اور آدھا بورڈ ادا کرے گا، انتظامی امور کی انجام دہی ابھی طے نہیں ہو سکی البتہ نئے فارمولے کے مطابق محکموں کو درجنوں کرکٹرز کو فارغ کرنا پڑے گا جو ماہانہ تنخواہ لے کر ان کی طرف سے فرسٹ کلاس سیزن کھیلا کرتے تھے۔

نئے فرسٹ کلاس سیزن میں ابتدائی معلومات کے مطابق ریجنز کے کھلاڑیوں کو سلیکشن میں اہمیت دی جائے گی۔ جو 8 ریجنز قائداعظم ٹرافی کھیلنے کیلئے منتخب ہوئے ہیں ان میںکراچی حبیب بینک، لاہور سوئی نادرن گیس، ملتان زرعی ترقیاتی بینک، اسلام آباد پی ٹی وی، فیصل آباد نیشنل بینک، راولپنڈی خان ریسرچ لیبارٹریز، پشاور واپڈا اور فاٹا سوئی سدرن گیس کمپنی شامل ہیں ۔

”ورلڈ کپ 1999میں بنگلہ دیش سے پاکستان کی شکست مشکوک تھی “بڑا دعویٰ

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )پی سی بی کے سابق سربراہ خالد محمود نے 1999کے ورلڈ کپ میں قومی کرکٹ ٹیم کی بنگلہ دیش سے شکست کو مشکوک قرار دے دیا ۔پاکستان کرکٹ ٹیم کو 31 مئی 1999 کو آئی سی سی ورلڈ کپ کے 29 ویں میچ میں حیران کن طور پر بنگلہ دیش کے ہاتھوں 62 رنز سے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

نجی نیوز چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی کرکٹ میں میچ فکسنگ کے حوالے سے اس میچ پر بڑے سوالات اٹھتے رہے ہیں اور اب ایک بار پھر اس شکست پر بات کی ہے، پاکستان کرکٹ بورڈ کے سابق سربراہ خالد محمود نے، جنھیں 1999 کے ورلڈکپ فائنل میں لارڈز کے میدان میں آسٹریلیا کے ہاتھوں شکست کے بعد عہدے سے ہٹا دیا گیا تھا۔

نجی ٹی وی کے پروگرام میں خصوصی گفتگو کرتے ہوئے خالد محمود نے کہا کہ 1999کے ورلڈکپ سے قبل ہی کھلاڑیوں پر شکوک کا اظہار کیا جا رہا تھا اور سوالات اٹھانے والے کوئی اور نہیں اس ٹیم کے کوچ لیجنڈ جاوید میانداد تھے، جنھوں نے ورلڈ کپ سے چند دن پہلے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا۔خالد محمود نے 31 مئی 1999میں بنگلہ دیش کے خلاف قومی ٹیم کی شکست کو حیران کن قرار دیتے ہوئے بتایا کہ اس وقت وہ پاکستان میں تھے اور اس نتیجے پر خاصے پریشان بھی ہوئے کیونکہ ٹیم پاکستان میں اس وقت وسیم اکرم کپتان تھے۔اس ٹیم میں وقار یونس، انضمام الحق، سعید انور، معین خان، سلیم ملک، اظہر محمود اور شاہد آفریدی جیسے کرکٹرز کی موجودگی میں بنگلہ دیش کے ہاتھوں شکست پر خالد محمود کہتے ہیں کہ ‘مجھے اس شکست پر بہت غصہ بھی آیا کیونکہ یہ ایک انوکھا قسم کا میچ تھا۔

حیدرآباد ، کشمیر ڈے والی بال فیسٹول کا آغاز ہوگیا

حیدرآباد(نمائندہ خصوصی)حیدرآباد ڈویژنل والی بال ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام سندھ والی بال ایسوسی ایشن و حیدرآباد اولمپک اسپورٹس کمیٹی کے تعاون سے حیدرآباد میں کشمیر ڈے والی بال فیسٹول کا آغاز ہوگیا۔آرگنائزنگ سیکریٹری وسیکریٹری حیدرآباد ڈویژنل والی بال ایسوسی ایشن پرویز احمد شیخ کی نگرانی میں منعقدہ مذکورہ فیسٹول کی افتتاحی تقریب کے مہمان خصوصی حیدرآباد اولمپک اسپورٹس کمیٹی کے صدر خرم رفیع صدیقی تھے۔اس موقع پر پروفیسر امتیاز علی منگی،سینیئر ڈائریکٹرز فزیکل ایجوکیشن عقیل احمد، یاسین شیخ،عبدالجواد،احمد نواز،سید محمد ندیم،طارق توفیق، ظفر وحید راجپوت بطور اعزازی مہمان موجود تھے۔ کھیلے گئے افتتاحی میچ میں دادو کالج نے سٹی کالج حیدرآباد کو 3-0 سے ہرا دیا۔میچز کو ذاکر علی نے سپروائز کیا۔

کیا سرفراز احمد ہی کپتان رہیں گے،واضح اعلان

لاہور(ماجد ہنجرا ء سے) پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین احسان مانی نے ان تمام افواہوں کو دفن کردیا کہ کپتان سرفراز احمد ٹیم کی مزید قیادت نہیں کریں گے، انہوں نے اعلان کیا کہ سرفراز احمد کپتان ہیں اور ورلڈ کپ تک وہ ٹیم کے کپتان رہیں گے۔

پی سی بی ہیڈ کوارٹر میں قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے احسان مانی نے کہا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ سرفراز احمد کپتان ہیں جو آسٹریلیا کے خلاف سیریز اور ورلڈ کپ میں بھی ٹیم کی قیادت کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ یہ افسوس کی بات ہے کہ ایک واقعے کے بعد قیاس آرائیاں کی گئیں کہ کپتان تبدیل ہورہا ہے۔

چیئرمین پی سی بی نے کہا کہ سرفراز احمد کا ریکارڈ بہت اچھا ہے ، سارا بورڈ ان کے ساتھ ہے اور ان کی مکمل حمایت کرتے ہیں، پہلے دن سے کہہ رہا ہوں سرفراز کپتان ہیں اور رہیں گے۔

احسان مانی نے کہا کہ ہر سیریز کے بعد ٹیم میں کپتان سمیت سب کی پرفارمنس دیکھتے ہیں، ورلڈ کپ کے بعد سرفراز کی کپتانی کا جائزہ لیں گے۔

چیئرمین پی سی بی کا کہنا تھا کہ سرفراز کی کپتانی تینوں فارمیٹ میں اچھی ہے، ان کی قیادت سے پہلے پاکستان کی رینکنگ 9 تھی اب 5 ہے اور وہ وکٹ کیپنگ میں بھی دنیا کے ٹاپ کیپر ہیں۔

احسان مانی کا کہنا تھا کہ ورلڈ کپ سے پہلے آسٹریلیا اور انگلینڈ سے سیریز ہیں، ہمیں ہار سے سبق سیکھنا چاہیے، نیوزی لینڈ سے ہمیں سیریز جیتنی چاہیے تھی تاہم کھیل میں ہار جیت ہوتی رہتی ہے۔

اس موقع پر کپتان سرفراز نے کہا کہ اعتماد کرنے پر پی سی بی کا مشکور ہوں، ورلڈ کپ میں کپتانی کرنا کسی بھی کپتان کے لیے اعزاز کی بات ہے، پاکستان کے لیے اچھے سے اچھا کرنے کی کوشش کریں گے ۔

انہوں نے کہا کہ جو غلطی کی اس کی سزا مل گئی اور سزا پوری بھی ہوگئی، اب آگے دیکھتے ہیں۔