پاکستان فضائی حدود کی اجازت دے رہا ہے، امریکہ

واشنگٹن: عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکا کے انڈر سیکرٹری برائے دفاعی پالیسی کولن کاہل نے سینیٹ کی آرمڈ سروسز کمیٹی کو افغانستان اور جنوبی و وسطی ایشیائی ممالک بالخصوص پاکستان اور افغانستان سے متعلق اہم بریفنگ دی۔

سینیٹ کمیٹی کے چیئرمین جیک ریڈ نے پاکستان کے طالبان کے ساتھ مل کر داعش کے خلاف کارروائیوں کے حوالے سے حالیہ میڈیا رپورٹس کا حوالہ دیتے ہوئے سوال کیا کہ پاکستان کے ساتھ ہونے والی بات چیت سے متعلق پینل کو اپ ڈیٹ کریں جس پر ڈاکٹر کولن ہل نے کہا کہ پاکستان کا افغانستان میں ایک چیلنجنگ کردار ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   ناروے میں سینکڑوں مسلمانوں کی کھلے آسمان تلے قرآن خوانی

کولن ہل نے مزید کہا کہ افغان سرزمین کے پاکستان سمیت کسی بھی ملک کے خلاف استعمال ہونا کسی کے بھی مفاد میں نہیں اور کوئی بھی اس کے حق میں نہیں ہے۔

اس موقع پر امریکا کے انڈر سیکرٹری برائے دفاعی پالیسی کولن ہل نے یہ بھی انکشاف کیا کہ پاکستان ہمیں اپنی فضائی حدود تک رسائی دیتا رہتا ہے اور دونوں ممالک اس رسائی کو جاری رکھنے کے بارے میں بات چیت بھی کر رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:   طالبان کے ہاتھ 85 ارب ڈالر کا جنگی ساز و سامان لگا

واضح رہے کہ اس سے قبل بھی امریکی حکام نے دعویٰ کیا تھا کہ پاکستان نے امریکی فوج کو اپنی فضائی حدود استعمال کرنے کی اجازت دی ہے تاہم پاکستان نے اس دعوے کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا تھا۔