پاکستان میں ایل این جی سیکٹر میں مالی تعاون شروع کررہے ہیں، چاپانی سفیر

اسلام آباد: چاپانی سفیر نے کہاہے کہ جاپان متبادل توانائی ایل این جی سیکٹر میں مالی تعاون کے لئے انرجی ٹرانزیشن اینیشیٹو شروع کررہا ہے، اس اقدام کے تحت دس ارب ڈالر کی مالی امداد دی جائے گی۔

جاپانی سفیر نے وفاقی وزیر توانائی حماد اظہر سے ملاقات کی، جس میں توانائی کے شعبے میں دوطرفہ تعاون پر بات چیت کی گئی، وفاقی وزیر نے بتایا کہ ملک میں مسابقتی عمل کے ذریعے تیل اور گیس کی تلاش کے نئے بلاکس دئیے جارہے ہیں، ان بلاکس کی نیلامی سے ملک میں تیل وگیس کی سرگرمیوں میں اضافہ ہوگا، حکومت کے اس اقدام سے مقامی تیل و گیس کی پیدوار میں اضافہ اور درامدی بل کم کرنے میں مدد ملے گی، جاپانی کمپنیاں تیل وگیس کے بلاکس کی نیلامی میں حصہ لیں۔

یہ بھی پڑھیں:   پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں تیزی کا رجحان غالب آگیا، روپیہ مستحکم

حماد اظہر نے جاپانی سفیر کو گردشی قرضے میں کمی کے اقدامات پر بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ گزشتہ ایک سال میں گردشی قرضے کا بہاؤ 538 سے کم کرکے 177 ارب پر لائے ہیں، حکومتی اقدام سے سرمایہ کاروں کی حوصلہ افزائی ہوئی ہے، صنعتی صارفین کے لئے پیکج سے بجلی کھپت میں 15 فیصد اضافہ ہوا ہے
وزیر توانائی نے جاپانی کمپنیوں کو بجلی کی ترسیل وتقسیم میں سرمایہ کاری کی بھی دعوت دی اور بلوچستان سمیت دوردراز علاقوں میں آف گرڈ سلوشن کے لیے تکنیکی سٹڈیز کے لئے جاپانی تعاون کی بھی درخواست کی۔

یہ بھی پڑھیں:   حکومت کا ٹرین آپریشن 10 مئی سے جزوی بحال کرنے کا فیصلہ

چاپانی سفیر کا کہنا تھا کہ جاپان متبادل توانائی ایل این جی سیکٹر میں مالی تعاون کے لئے انرجی ٹرانزیشن اینیشیٹو شروع کررہا، اس اقدام کے تحت دس ارب ڈالر کی مالی امداد دی جائے گی۔ جاپانی سفیر نے حماد اظہر کو ایشیا گرین پارٹنر شپ منسٹیرئل میٹنگ میں شرکت کی بھی دعوت دی۔