نواز شریف کی واپسی کیلئے برطانوی وزیراعظم سے بات کروں گا، عمران خان

Spread the love

لاہور: وزیراعظم کی زیر صدارت حکومتی ترجمانوں کا اجلاس ہوا جس میں وزیراعظم عمران خان نے اپوزیشن کے خلاف جارحانہ حکمت عملی اختیار کرنے کی ہدایت کردی، وزیراعظم نے کہا فوج اور حکومت ایک پیج پر ہیں، نواز شریف کی واپسی کیلئے برطانوی وزیر اعظم سے بات کرنا پڑی تو کروں گا۔

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت حکومتی ترجمانوں کا اہم اجلاس اسلام آباد میں ہوا جس میں ترجمانوں کو اپوزیشن کے خلاف جارحانہ حکمت عملی اختیار کرنے کی ہدایت کردی گئی۔ وزیراعظم نے کہا کہ فوج اور حکومت ایک پیج پر ہیں، اپوزیشن نے سول ملٹری تعلقات خراب کرنے کی ناکام کوشش کی۔

یہ بھی پڑھیں:   بھارت کو پلوامہ حملے میں تحقیقات اور دوطرفہ مسائل پر مذاکرات کی پیشکش، عمران خان کے بیان نے پوری قوم کا دل خوش کردیا

وزیراعظم نے کہا کہ نواز شریف کی واپسی کیلئے کوششیں شروع کردی ہیں، برطانوی وزیراعظم سے بھی بات کرنا پڑی تو کروں گا، نواز شریف کو وطن واپس لاکر قانون کے تابع کریں گے، قانونی ٹیم کو نواز شریف کی واپسی کیلئے تمام فورمز استعمال کرنے کی ہدایت کی ہے۔ ادھر وزیر اعظم سے گورنر سندھ سمیت قومی و صوبائی اسمبلی کے اراکین نے بھی ملاقات کی۔

یہ بھی پڑھیں:   اسلام آباد میں وزیر اعظم نے روشن ڈیجیٹل اکاﺅنٹ کا افتتاح کردیا

ذرائع کے مطابق سندھ حکومت کو ہوم گراؤنڈ میں جواب دینے کا پلان تیار کر لیا گیا ہے، وزیر اعظم نے سندھ پولیس کے معاملے کو سندھ حکومت کا خودساختہ بحران قرار دیا اور کہا کہ کیپٹن صفدر کی گرفتاری اور سندھ پولیس کے معاملے سے اچھی طرح باخبر ہوں، سندھ حکومت نے معاملے سے سیاسی فائدہ اٹھایا۔

یہ بھی پڑھیں:   حکومت کا گلگت بلتستان کو صوبائی حیثیت دینے کا اعلان

ملاقات میں سندھ حکومت کو اسمبلی کے اندر اور باہر آڑھے ہاتھوں لینے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔ سندھ حکومت کے خلاف جلسے، مظاہرے اور ریلیاں نکالی جائیں گی، اسمبلی کے اندر سندھ حکومت کی بیڈ گورننس اور کرپشن کو بےنقاب کیا جائے گا۔