اسٹیٹ بینک نے شرح سود میں کمی کردی

اسلام آباد: اسٹیٹ بینک نے مانیٹری پالیسی بیان جاری کردیا جس میں شرح سود کم کرکے 12 اعشاریہ 5 فیصد کردیا۔

اسٹیٹ بینک کی جانب سے جاری کردہ مانیٹری پالیسی بیان میں کہا گیا کہ مانیٹری پالیسی کمیٹی نے شرح سود 75 بیسس پوائنٹ کم کردیا ہے اور شرح سود 12.5 فیصد مقرر کیا گیا ہے جب کہ رواں مالی سال افراط زر 11 سے 12 فیصد رہے گا۔

یہ بھی پڑھیں:   ملکی تجارتی خسارہ 100 فیصد بڑھ گیا

اسٹیٹ بینک کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس کے باعث پاکستان کی معاشی ترقی کی شرح نمو میں کمی ہوگی اور مجموعی قومی پیداوار کی نمو 3 فیصد رہے گی، جب کہ کورونا وائرس سے پیدا ہونے والی صورتحال کے باعث نئی صنعتیں لگانے کیلیے 100 ارب روپے کی نئی اسکیم متعارف کرائی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   خام تیل کی قیمت 18 سال کی کم ترین سطح پر

گورنر اسٹیٹ بینک نے مانیٹری پالیسی بیان پر میڈیا بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر کرونا وائرس سے پیدا ہونے والے حالات سے نمٹنے کے لیے کافی ہیں، اسٹیٹ بینک کرونا وائرس سے نمٹنے کے لیے اسپتالوں کو 5 ارب کے قرضے دے گا اور ایک اسپتال زیادہ سے زیادہ 20 کروڑ قرضہ حاصل کرسکے گا، یہ رقم کرونا وائرس سے نمٹنے، ویکسین، وینٹی لیٹر اور دیگر ضروری اشیا کی خریداری کے لیے استعمال کی جاسکے گی۔