پاکستان میں ٹائیفائڈ کی نئی قسم کے خلاف ویکسی نیشن مہم کا آغاز

Spread the love

کراچی: پاکستان بالخصوص صوبہ سندھ میں ٹائیفائڈ کی ایک نئی قسم ایکس ڈی آر ٹائیفائڈ کی دریافت اور وبائی صورت کے بعد پورے صوبے میں ویکسین مہم شروع کردی گئی ہے۔

اس ضمن میں صوبے کے لاکھوں بچوں کو ٹائیفائڈ ویکسین دی جائے گی کیونکہ 2016ء سے منظرِ عام پر آنے کے بعد اب تک 11 ہزار افراد بالخصوص بچے ٹائیفائڈ کے شکار ہوچکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:   دانت صاف رکھیے... تاکہ دل محفوظ رہے، ماہرین

اس ضمن میں ایک نئی ویکسین بنائی گئی ہے جو بیرونِ ملک سے منگوائی گئی ہے اور پانچ سال تک ٹائیفائڈ کے اثر سے بچانے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ یہ ویکسین نو ماہ سے لے کر 15 سال تک کے بچوں کو پلائی جائے گی۔ اس کے بعد 2021ء تک اس پروگرام کو بڑھا کر اسے معمول کی ویکسی نیشن میں شامل کرکے پورے ملک پر لاگو کیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں:   پاکستان میں نوزائیدہ بچوں کی اموات کی شرح سب سے زیادہ

اس موقع پر صوبائی وزیرِ صحت ڈاکٹرعذرا فضل پیچوہو نے کہا کہ،’ ویکسین مہم شہری علاقوں سے شروع کی جائے گی کیونکہ یہاں اس مرض کا خطرہ زیادہ ہے۔

ٹائیفائڈ کی یہ نئی ویکسین عالمی ادارہ برائے صحت نے 2018ء میں منظور کی تھی جسے سوئزرلینڈ کی جی اے وی آئی ویکسین الائنس اور دیگر اداروں نے تیار کیا ہے۔ اس کی کم خرچ خریداری میں بِل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن، عالمی بینک اور دیگر اداروں نے بھی مدد کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   ملک بھر میں پولیو کے 77اور پنجاب میں 5کیس سامنے آنے کے بعد صوبے کے چھ اضلاع میں انسداد پولیو مہم شروع کردی گئی
کیٹاگری میں : صحت