امریکا کا القاعدہ کے 2 رہنماؤں کی معلومات دینے پر 10 ملین ڈالرز کا اعلان

Spread the love

واشنگٹن: امریکا نے القاعدہ کے دو اہم رہنماؤں سعد بن عاطف العولقی اور ابراہیم احمد محمود القوصی کے بارے میں معلومات فراہم کرنے والے کو مجموعی طور پر 10 ملین ڈالر انعام دینے کا اعلان کیا ہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکا نے القاعدہ کے دو سينئر رہنماؤں کے بارے ميں معلومات کی فراہمی پر دس ملين ڈالر تک کے انعامات کا اعلان کيا ہے۔ امریکا ان رہنماؤں کی گرفتاری یا ہلاکت پر مددگار کو انعامی رقم کی فراہمی اپنے ’انصاف کے لیے انعام‘ اسکیم کے تحت جاری کرے گا۔

یہ بھی پڑھیں:   123 یہودی انتہا پسندوں کی قبلہ اول کی اندر گھس کر بے حرمتی

اس حوالے سے امریکی محکمہ خارجہ کا کہنا ہے کہ سعد بن عاطف العولقی کی گرفتاری میں مدد دینے والے کو 6 ملين اور ابراہيم احمد محمود القوصی کے بارے ميں معلومات فراہم کرنے پر 4 ملين ڈالر انعام دينے کا اعلان کيا گیا ہے۔

سعد بن عاطف العولقی يمن کے ايک صوبے میں القاعدہ کا رہنما ہے جو شدت پسندوں کو امريکا پر حملوں کے لیے کئی بار سرعام ترغيب دے چکا ہے جب کہ محمود القوصی کو بھی امریکی شہریوں اور املاک کے لیے خطرہ خیال کیا جاتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   مقبوضہ کشمیر؛ گرنیڈ حملے میں پولیس اہلکاروں سمیت 34 شہری زخمی، ا ہلاک

واضح رہے کہ ’انصاف کے ليے انعام‘ نامی اسکیم کے تحت امريکی حکومت نے 35 برسوں ميں 150 ملين ڈالر کی رقوم بطور انعامات خرچ کی ہے اور امریکی حکام اسامہ بن لادن اور ابوبکر بغدادی کی ہلاکتوں کو اسی اسکیم کی کامیابی سمجھتے ہیں۔