فیس بک نے اکاؤنٹ کے لیے چہرے کی شناخت پر کام شروع کردیا

لندن: فیس بک کی بعض پوسٹس سے معلوم ہوا ہے کہ وہ ایپل فون کی فیس آئی ڈی کی طرح ایک آپشن پیش کررہا ہے جس سے آپ فیس بک موبائل ایپ تک رسائی حاصل کرسکیں گے۔

انٹرنیٹ تجزیہ کاروں کے مطابق اس کے لیے آپ کو ایک طرح کی ویڈیو سیلفی بنانی ہوگی اور چہرے کو مختلف سمتوں میں پھیرنا ہوگا۔ فیس بک نے وعدہ کیا ہے کہ اس طرح سے بنائی گئی ویڈیو کوئی اور نہیں دیکھ سکے گا اور ویڈیو سیلفی کا کلپ 30 روز کے بعد ازخود ڈیلیٹ ہوجائے گا۔

یہ بھی پڑھیں:   جاپان میں لکڑی کے اجزا سے کاروں کی تیاری

لیکن اب بھی بہت ساری فیس آئی ڈی کی مانند یہ کام نہیں کرتی۔ ان نظاموں میں پورے چہرے کو ریاضیاتی حوالے سے بیان کیا جاتا ہے۔ اسی لیے یہ کوئی باقاعدہ نظام نہیں ہوگا۔

فیس بک کے مطابق اکاؤنٹ کی تصدیق کے لیے آپ شناختی تصویر بھی اپ لوڈ کرسکتے ہیں تاہم بعض ویب سائٹ نے فیس بک سے بطورِ خاص خود پوچھا تو فیس بک انتظامیہ نے جواب دیا کہ ضروری نہیں کہ ویڈیو سیلفی کا آئی ڈی فیچر جلد ہی منظرِ عام پر آجائے کیونکہ فیس بک کے بہت سے منصوبے اب تک پیش نہیں کیے جاسکے۔

یہ بھی پڑھیں:   ٹوئٹر سے مواد ہٹانے کی درخواستوں میں ریکارڈ اضافہ‎، پاکستان میں بڑا اقدام اٹھا لیا گیا

دوسری جانب فیس بک ڈیٹا کی تشہیر، پرائیویسی کے مسائل اور جھوٹی خبروں کی اشاعت جیسے سنگین الزامات کی زد میں ہے۔ دوسری جانب فیس بک ویڈیو ڈیٹا کو بھی کسی تیسرے ادارے کے ہاتھوں میں دے سکتی ہے اور اسی بنا پر لوگ اس فیچر کو مسترد کرسکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:   دنیا کا وہ پہلا ملک جس نے سب سے بڑے فائیو جی نیٹ ورک کا آغاز کردیا

ویڈیو سیلفی ہیکروں کے ہاتھ لگ جائے تو اس سے بھی ڈیٹا حاصل کیا جاسکتا ہے تاہم فیس بک نے کہا ہے کہ ویڈیو میں چہرے کو ہلتا ہوا دیکھ کر اسے بطور آئی ڈی استعمال کیا جاسکتا تاکہ جعلی اکاؤنٹس کی بھرمار کو کم کیا جاسکے۔
شیئر