اٹھارہ ہزاری،ٹی ایچ کیو ہسپتال میں 30سالہ نوجوان کی ہلاکت،4 دن گزرنے کے باوجود ذمہ داروں کے خلاف کوئی کارروائی نہ سکی

Spread the love

اٹھارہ ہزاری(سبطین عباس ساقی سے)ٹی ایچ کیو ہسپتال میں 30سالہ نوجوان کی ہلاکت،4 دن گزرنے کے باوجود ذمہ داروں کے خلاف کوئی کارروائی عمل میں نہ آ سکی.محکمہ صحت کے حکام اپنے جونیئرسٹاف کو بچانے کے لیے سرگرم ہیں.

واضح رہے کہ نرسنگ سٹاف کی بے حسی کے باعث ہسپتال آنے والا تیس سالہ مریض غلام عباس تین گھنٹے تک مردہ حالت میں پڑا رہا

یہ بھی پڑھیں:   جھنگ : روزنامہ قدامت کی خبر پر ایکشن ، کرپٹ ڈپٹی ڈی او ایچ جھنگ عہدہ سے فارغ. تفصیلات کیلئے لنک اوپن کیجئیے

روڈوسلطان کے رہائشی غلام عباس کو علاج کے لیے جنرل وارڈ لایا گیاتھا لیکن نرسنگ سٹاف نے توجہ نہ دی لواحقین نے وزیر اعلی پنجاب سے نوٹس کا مطالبہ کیا ہے

دوسری جانب ایم ایس ٹی ایچ کیو ہسپتال اٹھارہ ہزاری ڈاکٹر عابد سیال کا کہنا ہے کہ مریض کی حالت انتہائی تشویشناک تھی لواحقین کو جھنگ لےجانے کا مشورہ دیا گیا تھا

یہ بھی پڑھیں:   جھنگ ،فاریسٹرز / فاریسٹ گارڈز ایسوسی ایشن کا اپنے مطالبات کے حق میں احتجاجی مظاہرہ

عملہ کی جانب سے سستی کا مظاہرہ نہیں کیا گیا اگر کوئی اہلکار غفلت کا مرتکب ہوا تو محکمانہ انکوائری کرکے سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی