حکومت بینکنگ ٹرانزکشن پر ود ہولڈنگ ٹیکس ودیگر ٹیکسز میں کمی لانا چاہتی ہے ،حماداظہر

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)وزیر مملکت برائے ریونیو نے انکشاف کیاہے کہ گزشتہ 8 سال سے ٹیکس کاہدف پورانہیں ہوا ,ٹیکس ہدف میں156ارب روپے کی کمی آئی ہے،بینکنگ ٹرانزکشن پر ود ہولڈنگ ٹیکس اوردیگر ٹیکسز میں کمی لانا چاہتے ہیں۔دنیا نیوز کے پروگرام ”دنیا کامران خان کے ساتھ “ میں گفتگو کرتے ہوئے حماداظہرنے کہا کہ گزشتہ 8سال سے ٹیکس کاہدف پورانہیں ہوا اورٹیکس ہدف میں156ارب روپے کی کمی آئی ہے ، مسلم لیگ ن کی حکومت نے گزشتہ سال 256ارب روپے کا کم ٹیکس اکٹھا کیا ، پٹرولیم مصنوعات پر بھی ٹیکس کم کرنے سے 30ارب روپے کا نقصان ہوا، فون کارڈ پر سپریم کورٹ کی جانب سے ٹیکس معطلی کی وجہ سے 70ارب روپے کا نقصان ہواہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم کوشش کررہے ہیں کہ پاکستان کی پراپرٹی کی ویلیوکا کوئی الگ ادارہ بنا کرہمیشہ کیلئے اس مسئلے کوحل کردیا جائے ، زمینوں کی قیمت کے تعین کا سائنسی طریقہ لانا چاہتے ہیں، اس حوالے سے بہت سا پیپر ورک مکمل کرلیاہے ، اس میں تھوڑ ی سی دیر تو ضرور ہوگی لیکن ایک شفاف نظام قائم ہوجائیگا جس سے آنیوالی نسلوں کوفائدہ ہوگا ۔انہوں نے کہا کہ اگر بینکوں پر زیادہ سختی کریں تو پھر لوگوں کی جانب سے پیسے جمع کروانے کی شرح کم ہوجائیگی جس سے معیشت کو بہت زیادہ نقصان پہنچتاہے ، ہم نے اس مسئلے کوحل بھی کرناہے اور لوگوں کی اس طرح حوصلہ شکنی بھی نہیں کرنی کہ وہ بینکنگ نظام سے دور چلے جائیں ، بینکنگ ٹرانزکشن پر ود ہولڈنگ ٹیکس اوردیگر ٹیکسز میں کمی لانا چاہتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:   اب پیپلز پارٹی کی قیادت بلاول کریں گے ،مصطفی نواز کھوکھر

Related

اپنا تبصرہ بھیجیں