عدالتی اصلاحات- اداروں میں مذاکرات کے حامی آصف سعید کھوسہ نئے چیف جسٹس بن گئے

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ کے سینئر ترین جج جسٹس آصف سعید کھوسہ نے ملک کے 26 ویں چیف جسٹس کے عہدے کا حلف اٹھالیا ہے۔ حلف برداری کی تقریب ایوان صدر اسلام آباد میں ہوئی جس میں صدرمملکت ڈاکٹر عارف علوی نے جسٹس آصف سعید کھوسہ سے چیف جسٹس کے عہدے کا حلف لیا، تقریب حلف برداری میں وزیراعظم عمران خان، وفاقی کابینہ اور پارلیمنٹ کے ارکان، اسپیکر قومی اسمبلی، چیئرمین سینیٹ اور مسلح افواج کےسربراہان سمیت سپریم کورٹ کے حاضر سروس اور ریٹائرڈ ججز نے بھی شرکت کی۔ چیف جسٹس پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ نے گزشتہ روز سابق چیف جسٹس ثاقب نثار کے اعزاز میں فل کورٹ ریفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ ازخود نوٹس کا اختیار بہت کم استعمال کریں گے، انصاف کی فراہمی میں تعطل دور کرنے کوشش بھی کی جائے گی جب کہ مقدمات میں غیر ضروری التواء روکنے کے لیے جدید آلات استعمال کریں گے، عدالتوں میں 19 لاکھ کیسز زیر التواء ہیں، 3 ہزار ججز اتنے مقدمات نمٹانہیں سکتے، ملٹری کورٹس میں سویلین کا ٹرائل ساری دنیا میں غلط سمجھا جاتا ہے۔ چیف جسٹس پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ فوج اور حساس اداروں کا سویلین معاملات میں کوئی دخل نہیں ہونا چاہیے، پچھلےادوار میں ریاستی اداروں کے درمیان عدم اعتماد کی فضاءپیدا کی گئی،سول اداروں کی بالا دستی ہونی چاہیے، جمہوری استحکام کیلئے ریاستی اداروں کا فعال ہونا ضروری ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   لاہور میں اسکول سے نکالنے پرطالب علم نے خاتون ٹیچر کو قتل کردیا

Related

اپنا تبصرہ بھیجیں