اسلام آباد دھماکے کے ملزمان اور سہولت کاروں کو گرفتار کرلیا، وزیر داخلہ

اسلام آباد: وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے کہا ہے کہ اسلام آباد کے سیکٹر آئی 10 فور میں ہونے والے دھماکے میں ملوث ملزمان اور سہولت کاروں کو گرفتار کرلیا۔

وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ نے بتایا کہ اسلام آباد دہشت گرد حملے کے ملزمان گرفتار کرلیے جبکہ سہولت کاروں کو بھی پکڑ لیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ حملہ آور کرم ایجنسی سے چلے اور راولپنڈی میں قیام کیا اور پھر وہ ہائی پروفائل ٹارگٹ کے لیے اسلام آباد میں داخل ہوئے جسے پولیس نے ناکام بنا دیا، واقعے کی تحقیقات میں ٹیکسی ڈرائیور کا کوئی قصور نہیں نکلا وہ بے گناہ تھا۔

یہ بھی پڑھیں:   افغانستان میں طالبان فاتح ، 20 سالہ جنگ کا اختتام

سماجی رابطے کی سائٹ ٹویٹر پر اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ ہم نے چار پانچ لوگوں کو ’راؤنڈ اپ کیا ہے جبکہ یہ بات بھی سامنے آئی کہ ملزمان نے ٹیکسی ڈرائیور سمیت کرائے پر حاصل کی تھی۔

واضح رہے کہ اسلام آباد کے سیکٹر آئی ٹین فور میں 23 دسمبر کو پولیس اہلکاروں کے روکنے پر دہشت گردوں نے ٹیکسi کو دھماکا خیز مواد سے اڑا دیا تھا۔ جس میں پولیس اہلکار سمیت تین افراد جاں بحق جبکہ 10 زخمی جن میں ڈرائیور بھی شامل تھا۔

یہ بھی پڑھیں:   اساتذہ کا بنی گالا میں دھرنا ختم کرنے کا اعلان

بعد ازاں تحقیقات میں ڈرائیور بے قصور پایا گیا تھا جس کے بعد وزیراعظم نے مقتول کے لئے مالی پیکج کی منظوری دے دی، جس پر لواحقین کو 1 کروڑ روپے مالیت کا چیک دے دیا گیا۔

دھماکے کے بعد اسلام آباد میں پندرہ روز کیلیے دفعہ 144 نافذ جبکہ سیکیورٹی ہائی الرٹ کردی گئی ہے، جس کے لیے مختلف مقامات پر چیک پوسٹیں قائم کی گئیں ہیں اور شہریوں کو شناختی دستاویزات کے بعد ہی آمد و رفت کی اجازت دی جارہی ہے۔