بھارت مقبوضہ کشمیر میں بچوں پرظلم بند کرے، اقوام متحدہ

جنیوا: اقوام متحدہ کے سیکرٹری نے کہا ہے کہ بھارت اپنی سیکیورٹی فورسز کو مقبوضہ کشمیر میں پیلٹ گن سے بچوں کو نشانہ بنانے سے روکے۔

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی رپورٹ بچوں اور مسلح تصادم کی روشنی میں جنرل سیکرٹری انتونیو گوتریس نے مطالبہ کیا کہ بھارت بچوں کو سیکیورٹی فورسز سے منسلک نہ کرے اور بچوں پر پیلٹ گن کے استعمال سے گریز کرے۔

یہ بھی پڑھیں:   مقبوضہ کشمیر، ہیلی کاپٹر حادثے میں بھارتی فوج کے 2 میجرز ہلاک

سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس نے مزید کہا کہ بھارتی فوج کے کشمیر میں بچوں کے خلاف سنگین خلاف ورزیوں کی رپورٹس نے مجھے غم زدہ کردیا ہے، میں اس صورت حال پر پریشان ہوں۔ بھارتی حکومت سے طلبا، اساتذہ، اسکولوں اور یونیورسٹیز کو مسلح تصادم سے بچانے کے لیے سیف اسکول اور وینکوور کے اصولوں کی جلد از جلد توثیق کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ مجھے مقبوضہ کشمیر اسکولوں میں فوجیوں کے قیام، بچوں کی گرفتاری اور تشدد پر تشویش ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   کشمیری حریت راہنُما سید علی گیلانی انتقال کرگئے

انتونیو گوتریس نے کشمیر میں زیر حراست بچوں کے ساتھ بھارتی فوج کے ناروا سلوک کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی حکومت گرفتار بچوں کی دیکھ بھال اور تحفظ کے قانون 2015 پر عمل درآمد کو یقینی بنائے۔ اقوام متحدہ کی رپورٹ میں مقبوضہ کشمیر میں بچوں کے ساتھ ناروا سلوک کے بارے میں تفصیلات کو بیان کیا گیا ہے جس میں بھارتی فوج کے اسکولوں پر قبضے، بچوں کو عسکریت پسند ظاہر کرکے گرفتار کرنے اور زیر حراست تشدد کا نشانہ بنانے کے شواہد پیش کیے گئے ہیں۔