خواجہ آصف کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد

Spread the love

لاہور: احتساب عدالت نے خواجہ آصف کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد کرتے ہوئے انہیں 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا ہے۔

آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں ن لیگ کے رہنما خواجہ آصف کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا پر سماعت ہوئی، خواجہ آصف کو جسمانی ریمانڈ کی مدت ختم ہونے پر احتساب عدالت میں پیش کیا گیا، اور نیب تفتیشی افسر نے عدالت سے خواجہ آصف سے مزید تفتیش کیلئے جسمانی ریمانڈ میں توسیع کی استدعا کی۔

یہ بھی پڑھیں:   لیفٹیننٹ جنرل(ر) عاصم سلیم باجوہ کو اہم ترین عہدے پر تعینات کردیاگیا،

نیب تفتیشی افسر نے عدالت میں مؤقف پیش کیا کہ خواجہ آصف نے بیرون ملک ایک ریسٹورنٹ بھی بنا رکھا ہے، اورانہوں نے بتایا ہے کہ ان کی تنخواہ اور ریسٹورنٹ کی آمدنی 136 ملین ہے، جب کہ ان کے ذاتی اکاؤنٹس میں بھی کروڑوں روپے جمع ہوئے، جب کہ خواجہ سلطان نے 2 کروڑ روپے خواجہ آصف کے اکاونٹ میں جمع کروائے۔ احتساب عدالت نے نیب تفتیشی افسر کی خواجہ آصف کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد کردی اور انہیں 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔

یہ بھی پڑھیں:   نواز شریف کو عدالت کے سامنے سرنڈر ہونے کا حکم