چین نے شمالی کوریا کے سربراہ کو کورونا ویکسین فراہم کردی

Spread the love

سیول: شمالی کوریا کے حوالے سے قائم امریکی تھنک ٹینک نے دعویٰ کیا ہے کہ چین نے شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ اُن اور ان کے خاندان کے افراد کو کورونا سے بچاؤ کی ویکسین فراہم کی ہے۔

اپنے آرٹیکل میں ہیری کا کہنا ہے کہ چین نے شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ ان، ان کے خاندان اور دیگر اعلیٰ قیادت کو کورونا سے بچاؤ کی تجرباتی ویکسین فراہم کی ہے۔
تھنک ٹینک کے رکن نے دعویٰ کیاکہ گزشتہ 2 سے 3 ہفتوں کے درمیان چینی حکومت کی جانب سے شمالی کوریا کی اعلیٰ قیادت کو ویکسین مہیا کی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   چین کا پاکستان کو گرے لسٹ سے نکالنے کے لیے بھرپور مدد کا اعلان

تاہم امریکی تھنک ٹینک کے رکن کے دعوے کی تصدیق نہیں ہوسکی ہے اور نہ ہی یہ بات سامنے آئی ہے کہ کس چینی دواساز کمپنی کی ویکسین فراہم کی گئی۔ خیال رہے کہ چین کی 3 دواساز کمپنیاں کورونا ویکسین کی تیاری میں مصروف ہیں جس کے باعث ماہرین کا قیاس ہے کہا ہے کہ کم جونگ ان تجرباتی طور پر یہ ویکسین استعمال کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں:   چین اپنے علاقوں پر کوئی سمجھوتا نہیں کرے گا، چینی وزیردفاع

دوسری جانب چینی وزرات خارجہ کی ترجمان ہوا چن ینگ نے ان رپورٹس پر کسی بھی قسم کے تبصرے سے گریز کیا اور کہا کہ انہوں نے اس حوالے سے کچھ بھی نہیں سنا۔
واضح رہے کہ شمالی کوریا کی جانب سے اب تک ملک میں کورونا وائرس کے کسی کیس کی تصدیق نہیں کی گئی تاہم جنوبی کوریا کی نیشنل انٹیلی جنس سروس نے پڑوسی ملک میں کورونا نہ پھیلنے کے امکان کو مسترد کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   بھارتی پائلٹ کو رہائی کی خبر کے بعد بھارتی فوج نے اپنی قوم کو بڑا سرپرائز دے دیا

انٹیلی جنس کے مطابق شمالی کوریا اور چین کے درمیان تجارتی تعلقات اور آمدورفت رہتی ہے اور ایسے میں کورونا پھیلنے کے خدشے کو خارج از امکان نہیں قرار دیا جاسکتا۔
رواں سال چین میں کورونا کیسز سامنے آنے کے بعد شمالی کوریا نے اپنی سرحدیں بند کردی تھیں اور ملک میں سیاحوں کے داخلے پر پابندی سمیت تمام بین الاقوامی پروازیں اور ٹرین سروس بھی معطل کر دی تھی۔