لاہور، پولیس مقابلے میں طالبہ جاں بحق

لاہور: اقبال ٹاؤن میں پولیس اور ڈاکوؤں میں مقابلے کے دوران فائرنگ کی زد میں آکر طالبہ جاں بحق ہوگئی۔

لاہور کے علاقے اقبال ٹاؤن میں پولیس اور ڈاکوؤں کے درمیان فائرنگ کے تبادلے میں گولی لگنے سے طالبہ فاطمہ جاں بحق ہوگئی، پولیس نے تینوں ڈاکوؤں کو گرفتار کرلیا جب کہ طالبہ فاطمہ کی لاش اسپتال منتقل کردی گئی ہے جہاں پوسٹ مارٹم کیا جائے گا اور رپورٹ آنے پر تعین کیا جائے گا کہ فاطمہ کو کس کی گولی لگی۔

یہ بھی پڑھیں:   پنجاب پولیس نے پتنگ فروشوں کے گرد گھیرا تنگ کر دیا، اتنی تعداد میں پتنگ برآمد کر لیں کہ آپ یقین نہیں کریں گے

آئی جی پنجاب انعام غنی نے پنجاب یونیورسٹی کے قریب پولیس مقابلے کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی آئی جی آپریشنز لاہور کو واقعہ کی تحقیقات اپنی نگرانی میں کروانے کا حکم دیتے ہوئے کہا ہے کہ تحقیقاتی رپورٹ جلد از جلد بھجوائی جائے۔

ترجمان ڈولفن فورس کے مطابق تینوں مسلح ڈاکوؤں نے سمن آباد ملت پارک میں یکے بعد دیگرے وارداتیں کی اور فرار ہو گئے تھے، ون فائیو کی کال پر ڈولفن اسکواڈ پی آر یو ڈاکوؤں کا تعاقب کر رہا تھا کہ پنجاب یونیورسٹی کے قریب ڈاکوؤں نے ٹیم پر فائرنگ کردی، ڈاکوؤں کی اندھا دھند فائرنگ کی زد میں آکر فاطمہ نامی لڑکی موقع پر جاں بحق ہوگئی۔

یہ بھی پڑھیں:   بھارت اگر گولی سے بات کرے گا تو گولی سے جواب دیں گے، پاکستان

دوسری جانب وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے بھی پولیس مقابلے کے دوران لڑکی کے جاں بحق ہونے کا نوٹس لیتے ہوئے آئی جی پنجاب سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔