نماز کے وقت مسجد الحرام اور مسجد نبویﷺ کے علاوہ تمام مساجد کے دروازے بند رہیں گے

جدہ: سعودی عرب میں حرمین شریفین (مسجد الحرام اور مسجد نبویﷺ) کے علاوہ تمام مساجد میں جمعہ اور پنجگانہ نمازوں پر پابندی عائد کردی گئی۔

عرب نیوز کے مطابق یہ فیصلہ سعودی عرب کی سینئر علماء اتھارٹی کے اجلاس میں کیا گیا جس کا مقصد کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنا ہے۔ علماء اتھارٹی کی جانب سے جاری بیان میں اعلان کیا گیا ہے کہ نماز کے وقت مسجد الحرام اور مسجد نبویﷺ کے علاوہ تمام مساجد کے دروازے بند رہیں گے، اس لیے شہری گھروں پر ہی نماز کی ادائیگی کریں۔

یہ بھی پڑھیں:   کورونا وائرس کا ایک اورکیس رپورٹ، پاکستان میں تعداد 21 ہوگئی

اعلان کے مطابق سعودی عرب میں نماز جمعہ کی ادائیگی بھی معطل رہے گی اور نماز جمعہ کے بدلے ظہر کی نماز یعنی چار رکعت ادا کی جائے گی۔ بیان میں میں کہا گیا ہے کہ مساجد سے صرف اذانیں دی جائیں گی اور مؤذن اذان میں ’آؤ نماز کی طرف‘ کے بجائے ’نماز گھر پر ہی ادا کریں‘ کے الفاظ ادا کریں گے جس کا مطلب جہاں ہیں وہیں نماز ادا کریں بھی لیا جاسکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   ملک میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 237 ہوگئی

علماء اتھارٹی کا کہنا ہے کہ یہ عارضی اقدام مفاد عامہ اور عوام کی صحت کے تحفظ کی خاطر کیا گیا ہے اور اس کی مذہبی طور پر اجازت ہے۔ خیال رہے کہ اس سے قبل متحدہ عرب امارات اور ترکی بھی باجماعت نمازوں پر پابندی عائد کرچکے ہیں جب کہ ایران میں نماز جمعہ کی ادائیگی روک دی گئی ہے۔

واضح رہے کہ سعودی عرب میں کورونا وائرس کے 172 کیسز سامنے آئے ہیں جس کے باعث پورے ملک کو لاک ڈاؤن کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ سعودی اقامہ اور ریزیڈنسی رکھنے والوں کو بھی سعودی عرب چھوڑنے اور واپس آنے کا آپشن دیا گیا ہے، اگر ملک کو ایک بار لاک ڈاؤن کر دیا گیا تو پھر کسی کو بھی جانے یا آنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں:   ایران کے 52مقامات نشانے پر ہیں اگر امریکی تنصیبات کو نشانہ بنایا تو ہمارا جوابپہلے بہت زیادہ سخت ہوگا،ڈونلڈ ٹرمپ

سعودی حکومت نے کورونا وائرس کے خدشے کے پیش نظر دیگر ممالک سے آنے والے عمرہ زائرین پر پابندی عائد کر رکھی ہے۔