کروناوائرس کا ٹیلی ویژن پر انٹرویو

قاہرہ: مصر میں ایک نجی ٹیلی ویژن نے ’’کروناوائرس‘‘ کو انٹرویو کے لیے بلا لیا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق نامعلوم شخص کروناوائرس کا روپ دھار کر مقامی ٹی وی کو انٹرویو دینے پہنچ گیا جس پر سوشل میڈیا صارفین شدید تنقید بھی کررہے ہیں۔ ’’جابر القرموتی‘‘ نے اپنے پروگرام میں ایک ایسے شخص کو انٹرویو کے لیے بلایا جس نے کروناوائرس کا روپ دھار رکھا تھا اس دوران مہمان سے مہلک وائرس سے متعلق کئی سوالات پوچھے گئے۔

یہ بھی پڑھیں:   سست اور کاہل لوگوں کو گھر بیٹھے رقم ملے گی

مذکورہ پروگرام کے ٹی پر نشر ہوتے ہی سوشل میڈیا پر ایک نئی بحث چھڑچکی ہے۔ کئی صارفین کا کہنا ہے کہ یہ صحافتی اقدار کے خلاف ہے جبکہ متعدد افراد نے جان لیوا وائرس سے کھلواڑ قرار دیا۔ مہلک کروناوائرس سے دنیا بھر میں اب تک 5 ہزار افراد ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ 1 لاکھ کے قریب افراد متاثر ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:   ملک میں کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 237 ہوگئی

متعدد افراد نے مؤقف اختیار کرتے ہوئے کہا کہ دنیا بھر میں جہاں سیکڑوں لوگ مارے جارہے ہیں وہیں ایسے بھی ٹی وی شوز ہیں جہاں کروناوائرس پر مزاحیہ مواد تیار کیا جارہا ہے۔ مذکورہ ہوسٹ نے نشر ہونے والے اپنے پروگرام کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے پیشہ ورانہ خدمات انجام دیتے ہوئے ایک طرح سے شہریوں کو آگاہی فراہم کی جس میں ’’کروناوائرس‘‘ سے متعلق متعدد سوال پوچھے جو حقیقت پر مبنی تھے۔

یہ بھی پڑھیں:   ویتنام کے گھنے جنگل سے ’’چوہا ہرن‘‘ دریافت.

https://twitter.com/DanielGHajjar/status/1238305724024926209