افغان صدر کی تقریبِ حلف برداری دھماکوں سے گونج اُٹھی

کابل: نومنتخب افغان صدر کی تقریب حلف برداری کے دوران 2 دھماکوں کی آوازیں سنائی دیں جس پر انہوں نے حاضرین کو اپنا سینہ دکھاتے ہوئے کہا کہ میں نے بلٹ پروف جیکٹ نہیں پہنی کیوں کہ میرا سینہ عوام پر قربان ہونے کے لئے حاضر ہے۔

برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کے مطابق کابل میں نومنتخب صدر کی تقریب حلف برداری جاری تھی کہ اس دوران 2 زوردار دھماکوں کی آواز سنائی دیں جس پر تقریب کو کچھ دیر کے لیے روک دیا تاہم کچھ ہی دیر بعد صدر اشرف غنی اسٹیج پر کھڑے ہوئے اور حاضرین کو اپنا سینہ دکھاتے ہوئے کہا میں نے بلٹ پروف جیکٹ نہیں پہنی ہوئی ہے کیوں کہ میرا سینہ افغان عوام پر قربان ہونے کے لئے حاضر ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   بھارت میں سکھ نے مسجد کیلیے اپنی زمین دیدی

بعد ازاں افغان صدر اشرف غنی نے اپنی تحریر شدہ تقریر جاری رکھی۔ جس میں انہوں نے طالبان اور امریکا کے درمیان ہونے والے امن معاہدے کی تعریف و توصیف کی تاہم طالبان اسیروں کی رہائی کے معاملے پر شدید تحفظات کا اظہار کیا اور ساتھ ہی اپنے حریف عبد اللہ عبداللہ کو عوام کے ووٹوں کا احترام کرتے ہوئے شکست تسلیم کرنے اور جمہوریت کو جاری رکھنے کے لیے ذاتی انا کو ختم کرنے کا مشورہ دیا۔

یہ بھی پڑھیں:   افغانستان میں امریکی ڈرون حملے میں ایک ہی خاندان کے 6 افراد جاں بحق

ادھر الیکشن کمیشن کی جانب سے صدارتی انتخاب میں اشرف غنی کی کامیابی کا نوٹیفیکشن جاری کرنے کے باوجود حریف رہنما عبداللہ عبداللہ نے نتائج کو مسترد کرتے ہوئے خود ساختہ صدر ہونے کا دعویٰ کیا اور اپنے حامیوں کے ہمراہ آج تقریب حلف برداری منعقد کی جہاں انہوں نے صدر کا حلف بھی اُٹھالیا۔

یہ بھی پڑھیں:   طالبان کی بھارت کو سفارتخانہ کھولنے کی پیشکش

دوسری جانب صدر اشرف غنی کی تقریب حلف برداری جاری ہے جس میں امریکا کے خصوصی نمائندے زلمے خیل زاد سمیت کئی ممالک کے نمائندے، اعلیٰ سرکاری حکام اور بڑی تعداد میں عوام بھی شریک ہیں۔