کرپشن کی روک تھام: 15 مزاروں پر چندہ مشینیں لگانے کا فیصلہ

Spread the love

لاہور: محکمہ اوقاف نے چندے کی خورد برد روکنے کیلئے لاہور سمیت پنجاب کے 15 بڑے مزاروں پر برقی مشینیں نصب کرنے کا فیصلہ کر لیا، چندہ اکٹھا کرنے کے لئے 8 کمپنیاں آزمائشی طور پر الیکٹرانکس مشینیں نصب کریں گی۔پنجاب میں اس وقت چھوٹے بڑے 543 مزارات ہیں جن سے محکمہ کو سالانہ تقریبا90 کروڑ سے زائد آمدن ہوتی ہے۔

داتا دربار پر زائرین سب سے زیادہ چندہ دیتے ہیں جو 35 سے 38 کروڑ روپے بنتے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے 10 سے 15 فیصد چندہ خورد برد کر لیا جاتا ہے۔ جن مزاروں پر مشینیں لگانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ان میں داتا دربار، پیر مکی، حضرت میاں میر، بی بی پاک دامن، شاہ رکن عالم، شاہ شمس تبریز ملتان، بابا فرید الدین گنج شکر پاک پتن، امام الحق سیالکوٹ، نوشو پاک، شاہ دولہ گجرات اور دیگر شامل ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:   گٹکا بنانے اور فروخت کرنیوالوں کی شامت آگئی عدالت نے زبردست حکم جاری کردیا

ذرائع نے یہ بھی بتایا ایک مشین کی قیمت 16 سے 45 لاکھ کے درمیان ہے اور متعدد مزاروں پر اسے آزمائشی طور پر نصب کیا جائے گا تاکہ اس کی کارکردگی کا جائزہ لیا جا سکے۔ ذرائع کا مزید کہنا ہے مشینوں کی تنصیب پر کچھ تکنیکی مشکلات کا سامنا بھی ہو گا کیونکہ اس کے لئے 24 گھنٹے بلا تعطل بجلی کی فراہمی ضروری ہے اور اگر تھوڑی دیر بھی مشین بند رہے تو وہ پیسے کاؤنٹ نہیں کرے گی.

یہ بھی پڑھیں:   بجلی سے چلنے والی دنیا کی تیز ترین گاڑی ، قیمت اتنی کہ سب کو حیران کر دے

غیر ملکی کرنسی اور پھٹے یا مڑے ہوئے نوٹ کی شناخت کے حوالے سے بھی مشین کی کارکردگی جانچی جائے گی۔اوقاف حکام کا کہنا ہے آزمائشی طورپر لگائی گئی مشینوں کی کارکردگی دیکھنے کے بعد ہی کمپنیوں کے ساتھ حتمی بات چیت ہو گی اور تمام قواعد وضوابط پورے کرنے کے بعد ٹھیکہ دیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں:   سونے کی قیمتوں میں نمایاں کمی