جو لوگ چیئرمین سینیٹ تبدیل نہیں کرسکے،وزیراعظم کیسے تبدیل کریں گے؟‘شیخ رشید

Spread the love

لاہور : وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشیداحمد نے کہا ہے کہ یہ لوگ چیئرمین سینیٹ تبدیل نہیں کرسکے،وزیراعظم کیسے تبدیل کریں گے؟جن کے گھر سے14ووٹ کم آئے ہوں وہ تبدیلی خاک لائیں گے،مجرم نوازشریف باہر جاسکتا ہے تو ملزم آصف زرداری کو بھی جانا چاہیے، شہبازشریف نے جس دن سچ بولا ان کی سیاست ختم ہوجائے گی، وہ نوازشریف کے ساتھ ٹوکن کے طور پر گئے ہیں.

یہ جب لندن جاتے ہیں کوئی نیا شگوفہ کھلاتے ہیں، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں توسیع طے شدہ مسئلہ ہے اور توسیع سادہ اکثریت سے ہوگی۔ان خیالات کااظہاروفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے لاہور واہگہ شٹل ٹرین 14 دسمبر سے چلانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ریلوے کی ترقی کیلئے کوشاں ہے، تاریخ میں پہلی بار ریلوے مسافر میں اضافہ ہوا ہے،پاکستان میں مسافرٹرینیں منافع میں جارہی ہیں،میں نے 4آنے خرچ نہیں کیے اورریلوے کو نفع دیا۔

یہ بھی پڑھیں:   پٹرول کی قیمت 75روپے فی لیٹر ! تحریک انصاف نے پاکستانیوں کو حیران کردیا

انہوں نے کہاکہ ایم ایل ون سے ایک لاکھ افراد کو روزگارملے گا،ایم ایل ون کا1872کلومیٹرتک نیا ٹریک ہوگا،ایم ایل ون کے ٹریک میں کوئی پھاٹک نہیں ہوگی۔ریلوے خسارے کو تین سال میں ختم کر دیں گے۔انہوں نے کہاکہ فریٹ ٹرینوں کا 10 فیصد کرایہ کم کر رہے ہیں۔شیخ رشید نے کہا کہ شہباز شریف نواز شریف کیساتھ بطور ٹوکن گئے ہیں،شہبازشریف جب لندن جاتے ہیں توکوئی نیا شگوفہ کھلاتے ہیں،شہبازشریف نے جس دن سچ بولا ان کی سیاست ختم ہوجائے گی۔

یہ بھی پڑھیں:   پنجاب بیوروکریسی میں بڑے پیمانے پر اکھاڑ پچھاڑ، کمشنرز‘ سیکرٹریز‘ ڈپٹی کمشنرز کے تقرر و تبادلے

شیخ رشید نے کہاکہ اگر مجرم نواز شریف باہر جاسکتا ہے تو ملزم آصف زرداری کو بھی حق حاصل ہے، فضل الرحمان تین سال بعد والے دسمبر کی بات کر رہے ہیں، سال بھی بتائیں،دسمبر2019فضل الرحمان کے دیکھتے دیکھتے گزر جائیگااورجس کو شوق ہے وہ تحریک عدم اعتماد لے آئے۔

یہ بھی پڑھیں:   لیفٹیننٹ جنرل(ر) عاصم سلیم باجوہ کو اہم ترین عہدے پر تعینات کردیاگیا،

وزیر ریلوے نے کہاکہ آپ مطالبہ کرتے ہیں الیکشن کمیشن شفاف ہونا چاہیے توپھر کیوں اپنی پسند کا جج لگواتے ہیں، اتفاق رائے سے الیکشن کمشنر لگوایاپھر 2018الیکشن کے نتائج کیوں نہ تسلیم کیے گئے؟ہمیں من پسند نہیں،اچھا جج لگانا چاہیے۔انہوں نے کہاکہ پارلیمنٹ کے فیصلے عدالتیں کرنے لگیں تووہ دن بھی آئیگا کہ عدالتیں ہی پارلیمنٹ کافیصلہ کرینگی۔