پاکستان کو وہ صوبہ جہاں 5 لاکھ بچے غذائی قلت کا شکار

Spread the love

پشاور: خیبر پختونخوا میں غذائی کمی کا شکار بچوں کی تعداد میں تشویشناک حد تک اضافہ ہو گیا۔ صوبے میں 39 جبکہ قبائلی اضلاع میں 48 فیصد بچے غذا کی کمی کا شکار ہیں۔ماہرین صحت کے مطابق غذائی کمی کا شکار بچوں کی شرح میں تشویشناک حد تک اضافہ ہو رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   ملک بھر میں پولیو کے 77اور پنجاب میں 5کیس سامنے آنے کے بعد صوبے کے چھ اضلاع میں انسداد پولیو مہم شروع کردی گئی

خیبر پختونخوا میں 39 فیصد جبکہ ضم شدہ قبائلی اضلاع میں 48 فیصد بچے غذائی کمی کا شکار ہیں۔قومی سروے 2018ء کے مطابق خیبر پختونخوا میں پانچ سال سے کم عمر بچوں میں دس میں سے چار بچے غذا کی کمی کا شکار ہیں۔

شہری کہتے ہیں غذائی کمی کو پورا کرنے کے لیے حکومتی سطح پر اقدامات کی ضرورت ہے۔ شہریوں نے غربت اور معاشی مسائل کو بھی بنیادی وجہ قرار دیا۔غذائی کمی کے باعث صوبے میں 17 فیصد بچے اپنے قد کی مناسبت سے کمزور جبکہ اکاون فیصد وٹامن اے کی کمی کا شکار ہوتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:   ہفتے میں ایک مرتبہ دوڑ لگانا قبل از موت سے بچاتا ہے، ماہرین کا تحقیق میں شاندار انکشاف
کیٹاگری میں : صحت