مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی ریاستی دہشت گردی میں 3 نوجوان شہید

Spread the love

سری نگر: قابض بھارتی فوج نے ایک بار پھر ریاستی دہشت گردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے نام نہاد سرچ آپریشن کے دوران 3 کشمیری نوجوانوں کو شہید کر دیا۔

کشمیر میڈیا سورس کے مطابق جنت نظیر وادی کے ضلع پلواما میں سرچ آپریشن کے دوران 3 نوجوانوں کو شہید کر دیا گیا، بھارتی فوج نے نوجوانوں کی لاشوں کو لواحقین کے حوالے کرنے سے منع کردیا اور شہید ہونے والوں کو دہشت گرد ثابت کرنے کی مذموم کوشش کی۔

یہ بھی پڑھیں:   میرے خلاف مواخذہ امریکی جمہوریت کے خلاف کھلی جنگ ہے، ڈونلڈ ٹرمپ

عینی شاہدین اور علاقہ مکینوں نے قابض بھارتی فوج کے دعوؤں کی قلعی کھولتے ہوئے احتجاجاً سڑکوں پر نکل آئے اور پر امن مظاہر کیا جسے سبوتاژ کرنے کے لیے قابض بھارتی فوج نے آنسو گیسا کی شیلنگ اور ہوائی فائرنگ کی جب کہ پیلٹ گن کا بے درخ استعمال کیا گیا جس کی زد میں آکر درجنوں مظاہرین زخمی ہوگئے۔

یہ بھی پڑھیں:   سوئزرلینڈ میں ایمرجنسی نافظ ، فرانس اور روس کا سرحدیں بند

علاقہ مکینوں کا کہنا تھا کہ بھارتی فوج نے داخلی و خارجی راستوں کو بند کرکے سرچ آپریشن کے دوران گھر گھر تلاشی کے نام پر چادر و چار دیواری کا تقدس پامال کیا، خواتین کی بے حرمتی، بزرگوں کی تذلیل اور بچوں کو ڈرایا دھمکایا گیا جب کہ قانونی تقاضوں کو پورا کیے بغیر 4 نوجوانوں کو گرفتار کرکے اپنے ہمراہ لے گئے۔

یہ بھی پڑھیں:   شام سے غیر ملکی افواج کے انخلاء کے شدت سے منتظر ہیں: عادل الجبیر