بھارتی جھیل کے کنارے ہزاروں پرندے پراسرار انداز میں ہلاک

راجستھان: خوبصورت پرندوں کی پراسرار ہلاکت کا ایک واقعہ بھارت میں پیش آیا ہے جہاں ہزاروں پرندے مردہ پائے گئے لیکن ماہرین اس کی وجہ بتانے سے قاصر ہیں۔

انڈیا میں خشکی سے گھری کھارے پانی کی سب سے بڑی جھیل ’سانبھر‘ راجستھان میں واقع ہے۔ ماہرین کے اس کے کناروں اور اطراف میں 2400 سے زائد پرندے مردہ حالت میں ملے ہیں جس کی حتمی وجہ اب تک سامنے نہیں آسکی۔

یہ بھی پڑھیں:   جاپانی کمپنی کا سگریٹ نہ پینے والے ملازمین کو 6 زائد چھٹیاں دینے کا فیصلہ

سب سے پہلے مقامی افراد نے مردہ پرندوں کو دیکھا اور محکمہ جنگلی حیات کو اس کی اطلاع دی جو 190 مربع کلومیٹر وسیع جھیل کے اطراف میں دیکھے گئے ہیں۔

بسانبھر جھیل پر ہرسال پرندوں کی بڑی تعداد نقل مکانی کرکے آتی ہے جو سائبیریا، منگولیا، ایران اور افغانستان سے ’وسط ایشیائی فلائی وے‘ سے یہاں پہنچتی ہے۔ اس علاقے میں نمک بھی تیار کیا جاتا ہے اور جھیل کا پانی انتہائی کھارا اور الکلی سے بھرپور ہوچکا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   چوتھی جماعت کا امتحان دینے والی 105 سالہ خاتون

جنگی حیات کے ماہر اشوک شرما نے بتایا کہ اس وقت جھیل میں نمک کی مقدار اتنی بڑھ چکی ہے کہ وہ کسی درجے پر زہریلی ہوچکی ہے تاہم اس کی مفصل رپورٹ بھوپال میں واقع مرکز سے آنا باقی ہے جس سے اموات کا تعین کیا جائے گا۔