حکومت نے کمرشل بینکوں سے 112ارب کا قرضہ حاصل کرلیا

Spread the love

کراچی : پاکستان تحریک انصاف کی وفاقی حکومت نے کمرشل بنکوں سے 112ارب روپے کا قرضہ حاصل کرلیاہے۔سرکاری ذرائع کا کہناہے کہ کمرشل بنکوں سے حاصل کیا گیا یہ قرض پاکستان انوسٹمنٹ بانڈز کے ذریعے حاصل کیا گیاہے ۔

ذرائع کے مطابق کمرشل بنکوں کی طرف سے حکومت کو 251ارب روپے قرض فراہم کرنے کی پیشکش کی گئی تھی تاہم حکومت نے 112ارب روپے اٹھا لئے ہیں۔وزارت خزانہ کے ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت نے یہ قرض تین ، پانچ اور دس سالہ مدت کے لئے سود پر حاصل کیاہے۔

یہ بھی پڑھیں:   یکم جنوری سے ایف بی آر کا نام تبدیل، پاکستان ریونیو اتھارٹی کہلائے گا

باون ارب روپے تین سال کے لئے گیارہ اعشاریہ اسی فیصد شرح سود پر حاصل کئے ہیں جبکہ چالیس ارب روپے گیارہ اعشاریہ پینتالیس فیصد شرح سود پر پانچ سال کے لئے قرض لیا گیاہے ۔اسی طرح بیس ارب روپے دس سال کے لئے گیارہ اعشاریہ پینتیس فیصد شرح سود پر قرض لیا گیاہے ۔

یہ بھی پڑھیں:   سٹاک مارکیٹ میں زبردست تیزی، پاکستانی روپے کے مقابلے میں امریکی ڈالر کی قدر مزید کم ہوگئی

اسٹیٹ بینک کی جاری کردہ رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ حکومتی قرضے تاریخ میں پہلی بر 33 ہزار ارب روپے سے تجاوز کر گئے ہیں۔رپورٹ کے مطابق ستمبر 2019 کے اختتام تک ملکی قرضے 33 ہزار 247 ارب روپے کی سطح پر آ گئے جو کہ گزشتہ سال اسی ماہ 25 ہزار ارب روپے کی سطح پر تھے۔

یہ بھی پڑھیں:   ڈالر کی قیمتوں میں کمی متوقع

سرکاری اعداد و شمار کے مطابق ایک سال کے دوران ملکی قرضوں میں آٹھ ہزار ارب روپے سے سے زائد کا اضافہ ہوا۔پاکستان تحریک انصاف کی موجودہ حکومت کے اقتدار میں آنے سے اب تک ملکی قرضوں میں نو ہزار ارب روپے تک کا اضافہ ہوچکا ہے۔