مقامی مارکیٹوں میں سبزیوں کی قیمتوں میں ہوش ربا اضافے پر قابو پانے کے لیے متبادل ذرائع تلاش کرنے کا فیصلہ

اسلام آباد : حکومت نے مقامی مارکیٹوں میں سبزیوں کی قیمتوں میں ہوش ربا اضافے پر قابو پانے کے لیے متبادل ذرائع تلاش کرنے کا فیصلہ کرلیا، جس میں ایران سے ٹماٹر درآمد کرنے پر بھی غور شروع کر دیا گیا گزشتہ ماہ ہونے والی موسلا دھار بارشوں کی وجہ سے خطے میں ٹماٹر کی قیمتوں میں اضافہ ہوا۔

یہ بھی پڑھیں:   سعودی عرب کے 77ہزارسیاحتی ویزوں کا اجراء،چین پہلے نمبر پر

پاکستان کے ادارہ شماریات کے مطابق ٹماٹر کی اوسطاً قیمت 180 روپے فی کلو ہے لیکن یہ ملک کے متعدد علاقوں میں 300 روپے فی کلو تک فروخت ہورہا ہے۔صورتحال قابو سے باہر ہونے پر وزارت تحفظ خوراک اسلام آباد میں درآمد کنندگان کے ساتھ بات کر کے ہمسایہ ممالک سے ٹماٹروں کی درآمدات میں تیزی لائی جائے گی ۔

یہ بھی پڑھیں:   حکومت کا سمال میڈیم سیکٹر کا قرض پرائیویٹ سیکٹر کے سات فیصد سے بڑھا کر سترہ فیصد تک لے جانے کا ٹارگٹ، حماد اظہر

اس حوالے سے وفاقی سیکریٹری برائے تحفظ خوراک محمد ہاشم پوپلزئی نے بتایا کہ ہم ایران سے ٹماٹر درآمد کرنے کی اجازت دینے پر غور کریں گے، اس سلسلے میں کچھ درآمد کنندگان کے ساتھ ملاقات کر کے اس کا فیصلہ کیا جائیگا۔ایک اندازے کے مطابق سندھ سے ٹماٹروں اور پیاز کی نئی فصل 2 سے 3 ہفتوں میں منڈیوں تک پہنچ جائے گی،

یہ بھی پڑھیں:   کورونا سے بچاؤ کیلئے اشیاء کی درآمد پر ڈیوٹی و ٹیکس فری کی منظوری

اس دوران ایران سے حاصل ہونے والی درآمدات کسی حد تک اس خلا کو پر کرنے میں مدد دے گی۔دوسری جانب وزارت تجارت سے ملک کا درآمدی بل کم کرنے کے لیے تقریباً ہر قسم کی سبزی پر کوالٹی اسٹینڈرڈ کے مطابق نان ٹیرف اقدامات متعارف کروادئیے ہیں۔