دھرنا ختم کروانے کیلئے آپریشن کیا گیا تو انسانی جانوں کے نقصان کا خدشہ ہے،سکیورٹی اداروں نے وزرات داخلہ حکام کو صورتحال سے آگاہ کردیا

Spread the love

اسلام آباد: سکیورٹی اداروں نے وزارت داخلہ حکام کو آزادی مارچ کی صورتحال کے حوالے سے آگاہ کردیا ذرائع کے مطابق رپورٹ میں بتایا گیا کہ میڈیا کوریج سے دھرنا شرکاء میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے،شام دھرنے شرکاء کی تعداد تقریباً 20 ہزار سے زائد تھی اور دھرنے میں 7ہزار سے زائد طلباء رات کو جڑواں شہر میں مدارس اور گھروں میں واپس چلے جاتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:   نہ تو وزیراعظم مستعفی ہوں گے اور نہ ہی نئے انتخابات ہوں گے، حکومت

ذرائع نے بتایاکہ دھرنے میں جے یو آئی ف کا وینگ انصار اسلام سکیورٹی فرائض انجام دے رہا ہے،انصار اسلام وینگ کے شرکاء نے ہاتھوں میں ڈنڈے اٹھا رکھے ہیں اور تربیت یافتہ ہے۔

ذرائع کے مطابق صبح کے وقت دھرنے کے شرکاء کی تعداد زیادہ ہونے کے باعث کسی قسم کے آپریشن نہیں کیا جاسکتا۔ذرائع نے بتایاکہ دھرنہ ختم کروانے کے لیے پولیس آپریشن کیا گیا تو انسانی جانوں کے نقصان کا خدشہ ہے۔ذرا ئع کے مطابق جے یوآئی ف رہنما مسلسل کنٹینر سے شرکاء کے مذہبی جذبات اور حکومت سے تصادم پر اکسا رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:   سابق سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ کو مدت ملازمت میں توسیع دیتے ہوئے چین میں پاکستانی سفیر تعینات کرنے کا فیصلہ