کرتارپور سکھ یاتریوں کے استقبال کے لیے تیار ہے، وزیراعظم

Spread the love

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے کرتارپور منصوبہ ریکارڈ وقت میں مکمل کرنے پراپنی حکومت کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا ہے کہ کرتارپور سکھ یاتریوں کے استقبال کے لیے تیار ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے کرتارپور منصوبے کی تصاویر ٹوئٹر پر شیئر کراتے ہوئے کہا ہے کہ میں گرو نانک جی کے 550 ویں جنم دن کی تقریبات کے لئے ریکارڈ مدت میں کرتار پور منصوبہ مکمل کرنے پراپنی حکومت کو دلی مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ کرتارپور سکھ یاتریوں کے استقبال کے لیے پوری طرح تیار ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   سندھ اور خیبر پختون خوا میں لاک ڈاؤن کا فیصلہ

کرتار پور راہداری منصوبے کی افتتاحی تقریب 9 نومبر کو ہوگی جس میں بھارت سے نوجوت سنگھ سدھو اور سابق بھارتی وزیراعظم منموہن سنگھ سمیت اہم شخصیات شریک ہوں گی۔

واضح رہے کہ دو روز قبل وزیراعظم نےکرتارپور زیارت کے لیے آنے والے سکھ یاتریوں کے لیے پاسپورٹ اور 10 روز قبل اندراج کرانے کی شرط ختم کردی تھی۔

یہ بھی پڑھیں:   غداری کیس فیصلہ روکنے کی درخواست؛ عدالت نے مشرف کے وکیل کو دلائل سے روک

کرتارپورکہاں واقع ہے؟

کرتارپور وہ مقام ہے جہاں سکھ مت کے بانی پہلے گرونانک نے اپنی زندگی کے آخری ایام گزارے تھے، گرودوارے میں ان کی ایک سمادھی اور قبر بھی ہے جو سکھوں کے لیے ایک مقدس مقام کی حیثیت رکھتی ہے۔

کرتارپور میں واقع دربار صاحب گرودوارہ کا بھارتی سرحد سے فاصلہ چند کلو میٹر کا ہی ہے اور نارووال ضلع کی حدود میں واقع اس گرودوارے تک پہنچنے میں لاہور سے130 کلومیٹر کا فاصلہ اور تقریباً 3 گھنٹے لگتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:   جعلی اکاؤنٹس کیس: راولپنڈی منتقل کرنے کے فیصلے کے خلاف آصف زرداری اور فریال تالپور کی درخواستیں مسترد

یہ گرودوارہ تحصیل شکر گڑھ کے ایک چھوٹے سے گاؤں کوٹھے پنڈ میں دریائے راوی کے مغربی جانب واقع ہے