بلوچستان میں ہزاربرادری پر دہشگرد حملہ میں ہمسایہ ممالک کی ایجنسیوں کےملوث ہونے کا انکشاف

کوئٹہ (مانیٹرنگ ڈیسک)بلوچستان میںہزاربرادری پر دہشگرد حملہ میں ہمسایہ ممالک کی ایجنسیوں کےملوث ہونے کا انکشاف ۔ تفصیلات کے مطابق ہزارہ برادری اور بس سوار مسافروں پر فائرنگ سمیت حملوں کی کڑیاں ہمسایہ ممالک سے جا ملیں ۔ دونوں حملوں میں بھارتی خفیہ ایجنسی ’را‘ اورافغان انٹیلی جنس ایجنسی ‘این ڈی ایس سمیت بلوچ علیحدگی پسند تنظیم کے براہ راست ملوث ہونے کے ثبوت موصول ہوئے ہیں ۔

یہ بھی پڑھیں:   سانحہ ماڈل ٹاؤن، جے آئی ٹی نے سابق وزیر قانون پنجاب رانا ثناء اللہ کو آج طلب کرلیا

قومی اخبار کی شائع کر دہ رپورٹ کے مطابق سرحد اور سفارتی محاذ پر شکست کےک بعد بھارتی خفیہ ایجنسی ، افغان انٹیلی جنس ، اسرائیلی ایجنسی موساد نے پاکستان کے اندر دہشتگردی پھیلانے کیلئے افغانستان کے صوبہ کنٹر میں ایک خفیہ ملاقات کی جس میں بلوچ علیحدگی پسند تنظیم اور کالعدم تنظمیوں کے رہنما موجود تھے ۔ ملاقات میں پاکستان کے اندر فرقہ وارنہ فساد ، صوبائی عصبیت پھیلانے سمیت دیگر منصوبے شامل تھے جس کے تحت کچھ لوگوں کو استعمال کر کے چندروز قبل ہزار برادری میں خودکش دھماکہ پھر بس میں سوار مسافروں کو نشانہ بنایا گیا ۔

یہ بھی پڑھیں:   یف آئی اے پشاور کی اپنے محکمے سمیت دیگر سرکاری اداروں کے خلاف کارروائیاں

ذرائع نے بتایا ہے کہ مذہبی فسادت پھیلانے کی ناکام کوشش کے بعد بس سے مسافروں کو اغوا کرنے کے بعد 14افراد کو شہید کیا گیا تاکہ صوبائی عصبیت پھیلائی جا سکے ۔جس وقت ان لوگوں کو قتل کیا تو اس وقت کالعدم تنظیموں نے ویڈیوز بنائی پھر ان ویڈیوز کو موساد ، رااور افغان انٹیلی جنس این ڈی ایس کے اہلکاروں کو بھجوایا گیا ۔ پاکستان کے اداروں نے اہم ثبوت حاصل کر لیے ہیں ۔ ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ ان دو واقعات میں براہ راست بھارت اور افغانستان کے دو قونصلیٹ اس منصوبہ بندی میں شامل ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:   پیراگون ہاﺅسنگ سکینڈل ،خواجہ برادران نے گرفتاری ہائیکورٹ میں چیلنج کر دی