آشیانہ ہاؤسنگ اسکیم کیس:‌ وکیل دفاع نے نیب کے پراسیکیوٹر کی جانب سے کیس کی پیروی کرنے پر اعتراض اٹھا دیا

اسلام آباد (زرائع) آشیانہ ہاؤسنگ اسکیم کیس میں سپریم کورٹ میں پیش ہونے والے وکیل دفاع نے قومی احتساب بیورو (نیب) کے ایڈیشنل پراسیکیوٹر جنرل جہانزیب بھروانہ کی جانب سے کیس کی پیروی کرنے پر اعتراض اٹھا دیا۔

وکیل دفاع کے مطابق نیب کے پراسیکیوٹر ’اس کمپنی کے قانونی میشر بھی تھے جس نے اسکیم متعارف کروائی‘۔

یہ بھی پڑھیں:   ارکان پنجاب اسمبلی کی تنخواہوں میں اضافہ موخر کر دیا، گورنر پنجاب کا دستخط نہ کرنے کا فیصلہ

وکیل علی رضا نے جسٹس عظمت سعید کھوسہ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی پینچ کو آگاہ کیا کہ جہانزیب بھروانہ پنجاب لینڈ ڈیولپمنٹ کمپنی کے قانونی مشیر تھے جس نے آشیانہ ہاؤسنگ اسکیم میں ترقیاتی کام کا ٹھیکہ دیا تھا۔

آشیانہ ہاؤسنگ منصوبے کے کوآرڈینیٹر بلال قدوائی، جو جیل میں قید ہیں، کی نمائندگی کرتے ہوئے وکیل علی رضا نے پینچ کو بتایا کہ جہانزیب بھروانہ کی اس کیس میں حیثیت مرکزی گواہ کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   فواد چودھری کو وزیر اطلاعات کے عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ کر لیا گیا