آصف زرداری اور بلاول نیب میں پیش، پولیس سے تصادم میں درجنوں کارکن گرفتار

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)آصف علی زرداری اور ان کے بیٹے بلاول بھٹو زرداری منی لانڈرنگ کیس میں نیب کے سامنے پیش ہوئے جہاں نیب نے ان سے ایک گھنٹہ سے زائد تفتیش کی

اس موقع پر پی پی پی کے مشتعل کارکنوں اور پولیس میں جھڑپ ہوئی جس کے بعد درجنوں کارکنوں کو گرفتار کرلیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق سابق صدرآصف علی زرداری اوربلاول بھٹو نیب راولپنڈی کے سامنے پیش ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں:   آر وائی گولڈ اور ارسس ٹریکٹرز ریفرنسز: اسلام آباد ہائی کورٹ نے آصف علی زرداری کے خلاف نیب سے ریکارڈ طلب کرلیا

دونوں سیاسی رہنماؤں نے میگا منی لانڈرنگ کیس میں نیب راولپنڈی کو اپنا بیان ریکارڈ کرایا اور نیب نے ان سے تقریبا ڈیڑھ گھنٹے تک تفتیش کی۔نیب نے چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو اورشریک چیئرمین آصف علی زرداری کی آج نیب راولپنڈی میں پیشی میں ہونے والی کارروائی کا اعلامیہ کردیا ہے۔

ترجمان نیب کے مطابق نیب کی کمبائنڈ انوسٹی گیشن ٹیم نےآصف زرداری اور بلاول بھٹو سے تقریبا دوگھنٹے مقدمات سے متعلق سوالات کئے، ابتدائی طور پر نیب سی آئی ٹی نے متعلقہ ڈی جی کی سربراہی میں فی الحال تین مقدمات سے متعلق سوالات پوچھے جب کہ مشترکہ تفتیشی ٹیم نے تین مقدمات سے متعلق ایک تحریری سوالنامہ بھی دیا۔

یہ بھی پڑھیں:   (ن) لیگ اورپیپلزپارٹی سے جھگڑا این آر او مانگنے پر ہے، فواد چوہدری

اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ بلاول بھٹو اورآصف زرداری کے نیب کو دئیے گئے جوابات اورسوالنامہ کے ذریعے موصول ہونے والے جوابات کی روشنی میں دوبارہ بلانے کافیصلہ کیاجائے گا۔

ترجمان نیب کا کہنا ہے کہ یہ انکوائری براہ راست چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاویداقبال کی نگرانی میں کی جارہی ہے،نیب آئین اورقانون کے مطابق اپنی تحقیقات کو منطقی انجام تک پہنچانے پر یقین رکھتاہے اورکسی دباؤکو خاطر میں لائے بغیرقانون کے مطابق ملک سے بدعنوانی کے خاتمہ کے لئے اپنا کام جاری رکھے گا۔

یہ بھی پڑھیں:   نواز شریف کی نااہلیت کیخلاف کیس سے جج نے معذرت کر لی