جعلی پی ایچ ڈی ڈگری: ڈریپ کے سربراہ کو برطرف کردیا

اسلام آباد (زرائع) وزارت قومی ادارہ صحت نے ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی آف پاکستان (ڈریپ) کے سربراہ کو برطرف کردیا۔ سیکریٹری وزارت صحت زاہد سعید نے ڈان کو بتایا کہ ’ڈاکٹر شیخ اختر حسین کو چیف ایگزیکٹو آفیسر تعینات کیا گیا تھا کیونکہ انہوں نے اپنی پی ایچ ڈی کی ڈگری میں اضافی مارکس لے کر امیدواروں کی فہرست میں اعلیٰ درجہ حاصل کیا تھا تاہم تحریری شکایت موصول ہونے پر ہائیر ایجوکیشن کمیشن (ایچ ایس سی) سے سی ای او کی ڈگری کی تصدیق کی گزارش کی گئی تھی‘۔

یہ بھی پڑھیں:   سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے وزیر خزانہ اسد عمر کے تمام بیانات کو مسترد کردیا

ان کا کہنا تھا کہ ’ایچ ای سی نے ہمیں بتایا کہ اس ڈگری کی سری لنکا میں بھی تصدیق نہیں کی گئی، جہاں سے اسے حاصل کیا گیا تھا تو پھر کیسے یہ پاکستان میں صحیح ہوسکتی ہے’۔

انہوں نے بتایا کہ سی ای او کو ہدایت کی گئی کہ وہ وزارت کو رپورٹ کریں جبکہ اس دوران ڈریپ کا عارضی طور پر چارج ایڈیشنل ڈائریکٹر عاصم رؤف کو دیا گیا جو اس عہدے کے لیے امیدواروں کی فہرست میں دوسرے نمبر پر تھے۔

یہ بھی پڑھیں:   پنجاب پولیس نے پتنگ فروشوں کے گرد گھیرا تنگ کر دیا، اتنی تعداد میں پتنگ برآمد کر لیں کہ آپ یقین نہیں کریں گے

خیال رہے کہ مارچ 2018 کے پہلے ہفتے میں حکومت نے ڈریپ کے سربراہ کے لیے اشتہار دیا تھا۔