وزیراعلیٰ پنجاب نے توہین آمیز بیان پر فیاض چوہان سے استعفیٰ طلب کرلیا، ان کی جگہ وزیر اطلاعات پنجاب کا عہدہ کون سنبھالیں گے؟نام سامنے آگیا

لاہور( آن لائن،مانیٹرنگ ڈیسک ) وزیراعلیٰ پنجاب عثما ن بزدار نے ہندو کمیونٹی سے متعلق توہین آمیز بیان پر وزیراطلاعات فیاض چوہان سے استعفیٰ طلب کرلیا جبکہ ان کی جگہ صمصام بخاری کا نام سامنے آگیا ہے۔

تفصیلا ت کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے وزیر اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان کو ایوانِ وزیراعلیٰ طلب کیا۔جہاں ان سے غیر ذمہ دارانہ بیان پر استعفیٰ طلب کیا اس سے قبل بھی ان کی شکا یا ت تھی جس پر انہیں تنبیہ کی گئی تھی اس کے باوجو د انہو ں نے اتنا سخت بیا ن دیا جس کی وجہ سے ملک کے حا لا ت مزید خراب ہو سکتے تھے ۔

یہ بھی پڑھیں:   پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی کرنے پر 3ماہ قید کی سزا سنا دی

فیاض چوہان کے اس سے قبل بھی صحافیوں کے ساتھ بدتمیزی کے معاملات اور متنازع بیانات سامنے آئے جس پر انہیں معافی مانگنی پڑی جبکہ تازہ بیان پر انہیں طلب کرنے کا فیصلہ کیا گیا وزیراعلیٰ سردار عثما ن بزدار نے کہا کہ آئین کے تحت اقلیتوں کے برابر کے حقوق ہیں اور ان کا خیال رکھنا حکومت کی ذمہ داری ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   پی آئی اے کی پرواز میں بم کی اطلاع

وزیر اطلاعات کی جانب سے استعفیٰ دیے جانے کے بعد اسے وزیراعظم عمران خان کو بھجوایا جائے گا اور اس کی منظوری کا حتمی فیصلہ وزیراعظم ہی کریں گے۔واضح رہے کہ گزشتہ روز ایک بیان میں فیاض الحسن چوہان نے ہندو کمیونٹی سے متعلق غیر اخلاقی بیان دیا تھا جس پر انہوں نے بعد میں وضاحت اور معذرت بھی کی لیکن اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے وزیراطلاعات کے بیان کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جاریا ہے۔نجی ٹی وی کے مطابق پنجاب کے نئے وزیر اطلاعات کیلئے صمصام بخاری فیورٹ ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:   پنجاب میں ن لیگ کے بڑے فارورڈ بلاک کی پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت کا دعویٰ