بھارت کا ٹماٹر پاکستان کو فروخت نہ کرنے کا فیصلہ

لاہور( وائس آف ایشیا)پلوامہ حملے کے بعد بھارتی میڈیا کی بدحواسی عروج پر پہنچ گئی، بھارتی ٹماٹر پاکستان کو فروخت نہ کرنے کے فیصلے کو بریکنگ نیوز بنا دیا۔ جعلی رپورٹس نشر کر دیں۔ تاجروں کا کہنا ہے بھارتی ٹماٹر مضر صحت ہیں، گذشتہ 3 سال سے درآمدات پر پابندی ہے۔بھارتی کسانوں نے اعلان کر دیا کہ ہم پاکستان کو ٹماٹر برآمد نہیں کریں گے۔

اس خبر کو بھارتی میڈیا نے خوب اچھالا اور بھارت کی پاکستان کے خلاف بڑی کارروائی قرار دے کر شور مچانا شروع کر دیا، بھارتی میڈیا نے کہا کہ پاکستان ہمارے ٹماٹر کھا کر ہم پر حملہ کرتا ہے، ہمارے جوانوں کو مارتا ہے ہم ٹماٹر نہیں دینگے، بھارتی ٹی وی کی خبر مذاق بن گئی۔

یہ بھی پڑھیں:   شہد کے طبی فوائد

کسانوں کے نمائندے رویندرا پٹی دار نے کہا کہ وہ زیادہ تر ٹماٹر اگاتے ہیں، جس کا ایک حصہ پاکستان کو برآمد کرتے ہیں۔ پاکستان ہماری خوراک کھا کر ہمارے فوجیوں کو مارتا ہے، اب ہم نہ خود پاکستان کو ٹماٹر برآمد کریں گے، نہ کسی دوسرے ملک کو کرنے دیں گے۔ ان کیلئے منافع سے زیادہ اہم اپنے فوجی ہیں، فوجی ہی نہ رہے تو ہم زندہ کیسے رہیں گے۔

یہ بھی پڑھیں:   کاربن اخراج کی بڑھتی ہوئی مقدار سبزیوں اور پھلوں کو جنک فوڈ بنا رہا ہے، ماہرین

غلط، جھوٹی اور بے بنیاد خبریں نشر کرنے میں بھارتی میڈیا کا کوئی ثانی نہیں، بیماریاں پھیلانے والے مضر صحت بھارتی ٹماٹر پر پاکستان نے گذشتہ 3 سال پابندی عائد کر رکھی ہے۔ فروٹ اینڈ یجیٹبل ایسوسی ایشن کے سرپرست اعلی وحید احمد کا کہنا ہے کہ بھارتی ٹماٹر مضر صحت ہیں، گذشتہ 3 سال سے درآمدات پر بابندی عائد ہے، بھارتی میڈیا غیر ذمہ داری کا مظاہرہ کر رہا ہے، ہٹ دھرمی میں خود بھارت کا ہی نقصان ہے۔

یہ بھی پڑھیں:   سندھ میں ایکس ڈی آر ٹائیفائیڈ کے خلاف ویکسین مہم شروع کرنے کا اعلان
کیٹاگری میں : صحت