وزیراعظم اورسعودی ولی عہد کی ملاقات، متعدد معاہدوں اور مفاہمتی یادداشتوں پر دستخط

اسلام آباد(ویب ڈیسک)سعودی ولی محمد بن سلمان کے دورہ پاکستان کے موقع پر دونوں ممالک کے درمیان متعدد معاہدوں اور مفاہمتی یادداشتوں پر دستخط کیے گئے۔ وزیراعظم عمران خان سے سعودی ولی عہد کی ون آن ون ملاقات کے بعد معاہدوں اور ایم اویوز پر دستخط کے لیے تقریب منعقد ہوئی جس میں وزیر خزانہ اسد عمر نے سعودی ہم منصب کے ہمراہ معاہدوں اور ایم اویوز پر دستخط کیے۔

یہ بھی پڑھیں:   نہیں چاہتے نواز شریف کی طرح عمران خان کو بھی نکالا جائے،سعد رفیق

پاکستان اورسعودی عرب کےدرمیان اسٹینڈرائزیشن کےشعبے میں تکنیکی تعاون،نوجوانوں کے اموراورکھیلوں کے شعبے میں تعاون بجلی کی پیداوارکےشعبےمیں تعاون کے معاہدوں پر دستخط کیے گئے۔ دونوں ممالک کے درمیان معدنی وسائل کے شعبے، ریفائنری پیٹروکیمیکل پلانٹ کے قیام اور متبادل توانائی مصنوعات کی ترقی کے لیے مفاہمتی یادداشت پر دستخط کیے گئے۔

یہ بھی پڑھیں:   آمدن سے زائد اثاثہ جات ریفرنس،ارباب عالمگیر کا فرد جرم کیخلاف درخواست دائر کرنے کا فیصلہ

اس موقع سعودی ولی عہد کا کہنا تھا کہ 20 ارب ڈالر کے معاہدے سرمایہ کاری کا پہلا مرحلہ ہے، اگلے20 سال میں پاکستان میں سیاحت کا شعبہ فروغ پائے گا اور آنے والے وقت میں دونوں ممالک کے تعلقات مزید پروان چڑھیں گے۔