سعودی ولی عہد کی پاکستان آمد، جڑواں شہروں کیلیے سیکیورٹی پلان تیار

Spread the love

اسلام آباد(بیورورپورٹ) سعودی ولی عہد شہزاد محمد بن سلمان کی پاکستان کے موقع پر جڑواں شہروں کے لیے مثالی سیکیورٹی پلان ترتیب دے دیا گیا ہے۔تفصیلات کے مطابق سعودی ولی عہد شہزاد محمد بن سلمان کی پاکستان آمد کے موقع پر اسلام آباد میں 1000 سے زائد سیکیورٹی چیک پوائنٹس ترتیب دیئے جائیں گے،

یہ بھی پڑھیں:   عوام کے پیسے پر بادشاہت کے نظام کا خاتمہ ، ڈومور کہنے والا امریکہ افغانستان کیلئے مدد مانگ رہاہے:وزیر اعظم کا کام نہ کرنے والے وزراءکو نکالنے کا عندیہ

اسلام آباد کی فضائی حدود مکمل طور پر بند کردی جائے گی اور 16 اور 17 فروری کو جڑواں شہروں کے مخصوص علاقوں میں موبائل سروس بھی بند رہے گی۔ذرائع کے مطابق اسلام آباد کی اہم شاہراؤں پر بڑی گاڑیوں کا داخلہ 2 روز کے لئے بند رہے گا،

شاہراہ دستورریڈیو پاکستان سے سیرینا ہوٹل، سہروردی روڈ تک بند رہے گی اور مری روڈ فیض آباد انٹر چینج سے سیرینا چوک تک بند رہے گی، ایکسپریس ہائی وے کورال چوک سے فیصل ایونیو 15 یوٹرن تک محدود اوقات میں بند کی جائے گی جب کہ پشاور، کہوٹہ، مری سے آنے والی ٹریفک کو متبادل راستے فراہم کیے جائیں گے

یہ بھی پڑھیں:   اسلام آباد : پاک بھارت کشیدگی کے باوجود سعودی عرب کی اہم شخصیت آج پاکستان پہنچے گی، پاکستانی قیادت سے اہم معاملات زیرگفتگو لائے جائیں گے

ذرائع کا کہنا ہے کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکارجڑواں شہروں کی اہم شاہراؤں پر تعینات کئے جائیں گے، اسلام آباد میں ڈرون یا اس جیسے کھولنے نما ہیلی کاپٹروں کو دیکھتے ہی گولی مار دی جائے گی،

اسلام آباد ریڈزون میں گاڑیوں کا داخلہ 2 روزبند رہے گا اور جڑواں شہروں کی میٹروبس سروس راولپنڈی تک محدود رہے گی۔

یہ بھی پڑھیں:   ہمارے معاشرے میں لوگ طلاق کی وجوہات جانے بغیر صرف خاتون کو قصور وار ٹھہراتے ہیں، اداکارہ متھیرا