میاں جاوید کی لاش کو ہتھکڑی کیوں لگائی گئی تھی؟، دردناک انکشاف

اسلام آباد (ویب ڈیسک)نیب کی حراست میں رہنے والے مسلم لیگ ن کے رہنما راجہ قمر اسلام نے انکشاف کیاہے کہ کیمپ جیل میں قید میاں جاوید کی لاش کو ہتھکڑ ی لگا کر جیل سے ہسپتال منتقل کیا گیا ۔

نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے راجہ قمر الاسلام نے کہا کہ نیب نے 60دن کے ریمانڈ میں مجھ سے صرف دو گھنٹے کی تفتیش کی ، علیم خان کی گرفتاری تواز ن قائم رکھنے کی کوشش ہے ۔ انہوں نے کہا کہ نیب کا بھی کوئی قصور نہیں بلکہ نیب قانون میں سقم ہے جو ایک آمر کے دور میں بنایا گیا تھا ۔

یہ بھی پڑھیں:   آصف زرداری نااہلی درخواست؛ سیاسی لڑائی سیاسی فورم پر لڑنی چاہیے، اسلام آباد ہائی کورٹ

انہوں نے کہا انکشاف کیا کہ جیل کے سیل میں ہم سب لوگ نماز جمعہ کیلئے گئے تھے اور جب ہم واپس آئے تو جیل میں قید استاد میاں جاوید کوبرین ہیمریج ہوگیا ، اس کے ناک سے خون آرہا تھا ، ان کو جیل کے ہسپتال لے جایا گیا تو ان کی موت واقع ہوچکی تھی ، اس کے بعد ان کی لاش کو ہتھکڑی لگا کر ہسپتال بھیجا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ وہ بھی کسی کے والد تھے اور وہ تعلیم بانٹ رہے تھے ، اگر ان سے کوئی بات ہوئی بھی تھی تو تعلیم کے میدان میں ہوئی تھی لیکن ان کی لاش کو ہتھکڑی لگا کر جیل سے ہسپتال بھیجا گیا ۔

یہ بھی پڑھیں:   جسٹس آصف سعید کھوسہ آج بطور چیف جسٹس عہدے کا حلف اٹھایں گے