پاکستان کی کرتاپور راہداری کھولنے کے لئے بھارت کو مذاکرات کی پیشکش

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان نے بابا گرونانک کے 550 ویں جنم دن پر کرتاپور راہداری کھولنے کے لئے بھارت کو مذاکرات کی پیشکش کی ہے۔ دفترخارجہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان بابا گرونانک کے 550 ویں جنم دن کے موقع پر 2019 میں کرتار پور راہداری کھولنے کا ارادہ رکھتا ہے، اور اس حوالے سے حکومت پاکستان کی جانب سے ڈائریکٹر جنرل جنوبی ایشیا ڈاکٹر فیصل کو کرتار پور پر فوکل پرسن تعینات کر دیا گیا ہے۔ دفترخارجہ کے مطابق حکومتِ پاکستان نے کرتارپور معاہدے کا ڈرافٹ بھارت کو بھجوا دیا ہے، بھارتی ہائی کمیشن کے حوالے کے گئے ڈافٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان بابا گرونانک کے 550 ویں جنم دن کے موقع پر 2019 میں کرتار پور راہداری کھولنے کا ارادہ رکھتا ہے، بھارت کرتار پور معاہدے پر مذاکرات کے لیے جلد اپنا وفد اسلام آباد بھیجے۔ ترجمان دفترخارجہ کا کہنا ہے کہ بابا گرونانک کے 550 ویں جنم دن پر کرتاپور راہداری کھولنے کا فیصلہ اسلامی اصولوں کے مطابق کیا گیا ہے، ہم اسلامی اصولوں کے مطابق تمام مذاہب کا احترام کرتے ہیں اور قائد کے وژن کے مطابق پر امن ہمسائیگی پر یقین رکھتے ہیں، پاکستان علاقائی امن و ترقی کے لئے کام کرتا رہے گا۔

یہ بھی پڑھیں:   امریکہ کی جانب سے بھارت کے خلاف پاکستان کو ایف-16 کے دفاعی استعمال کی اجازت تھی

Related

اپنا تبصرہ بھیجیں